ایران سے جنگ تمام جنگوں پر بھاری ہو گی، حسن روحانی

ایران سے جنگ تمام جنگوں پر بھاری ہو گی، حسن روحانی
خطے میں اپنے فوجیوں کے لیے امن چاہیے تو سلامتی کے بدلے سلامتی ہو، روحانی۔۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ ایرانی میڈیا

تہران: ایران کے صدر حسن روحانی نے امریکا کو انتباہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران سے جنگ تمام جنگوں پر بھاری ہو گی۔ حسن روحانی نے کہا کہ خطے میں اپنے فوجیوں کے لیے امن چاہیے تو سلامتی کے بدلے سلامتی ہو اور ہماری سیکورٹی متاثر کر کے اپنے تحفظ کی توقع کرنا بے کار ہے۔


انہوں نے کہا کہ امن کے بدلے امن، تیل کے بدلے تیل کا فارمولہ ہے اور جھوٹے دعوے مت کرو، سیکورٹی کے بدلے ہی سیکورٹی ملے گی۔ امریکا اگر ایران سے مذاکرات چاہتا ہے تو تمام پابندیاں اٹھانا ہوں گی۔ پابندیاں اٹھا لیں تو امریکا کو مجرم تصور نہیں کیا جائے گا۔

علاوہ ازیں ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف نے کہا ہے کہ امریکا کو افغانستان میں 18 سال بعد طالبان سے مذاکرات کرنا پڑے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے امریکی اقدامات پر ردعمل کرتے ہوئے کہا کہ عراق میں امریکی موجودگی کا نتیجہ داعش کی صورت میں نکلا۔ شام میں امریکی موجودگی سے بھی رسوائی ملی اور 290 افراد کو ایران ائر بس حملے میں مارا گیا۔ گرناڈا کے علاوہ امریکا نے 70 برس میں کوئی جنگ نہیں جیتی۔

جواد ظریف نے کہا کہ اب بھی امریکا کو ناکامی کا سامنا ہو گا اور امریکی عوام سے ہمارا کوئی جھگڑا نہیں جبکہ ٹیکساس واقعہ پر ہمیں افسوس ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی عوام لوگوں کو ستانے، تشدد کے کلچر کا نشانہ بنے ہیں اور امریکی عوام اس کلچر کا نشانہ بنے کہ میز پر بات جنگ کی ہو گی تاہم جنگ کا کلچر نہیں چل سکتا۔