سکول پرنسپل کےکمپیوٹر سے ایسی ویڈیوز نکل آئیں جنہیں دیکھ کر والدین پریشا ن ہو گئے

سکول پرنسپل کےکمپیوٹر سے ایسی ویڈیوز نکل آئیں جنہیں دیکھ کر والدین پریشا ن ہو گئے

ٹوکیو : جدید ٹیکنالوجی نے جہاں انسان کی زندگی میں بہت سی آسانیاں پیدا کی ہیں وہیں کچھ بدبختوں نے اس کا ایسا شرمناک استعمال شروع کردیا ہے کہ شیطان بھی پناہ مانگے۔ جاپان میں ایک ایسے ہی اخلاق باختہ شخص نے اپنے سکول میں زیر تعلیم طالبات کی ویڈیوز بنانے کے لئے سکول کے واش روم میں خفیہ کیمرہ لگا ڈالا، جو دیکھنے میں فائر الارام جیسا نظر آتا تھا۔


ویب سائٹ WWWNکی رپورٹ کے مطابق 33سالہ شخص تاکیشی مارویاما سکول کا مالک ہے اور وہ لڑکیوں کے واشروم میں کیمرہ لگاکر ایک عرصے سے ان کی ویڈیوز ریکارڈ کررہا تھا۔ اوکایاما پولیس کے مطابق تاکیشی کو ایک دوسرے کیس میں گرفتار کیا گیا تھا۔ جب پولیس اس کے لیپ ٹاپ کی تلاشی لے رہی تھی تو اس پر نوعمر طالبات کی سینکڑوں قابل اعتراض ویڈیوز برآمد ہوئیں۔ جب اس معاملے کی تفتیش کی گئی تو معلوم ہوا کہ تاکیشی نے اپنے سکول کے واشروم میں خفیہ کیمرہ لگارکھا تھا۔ یہ واشروم سارا دن سکول کی طالبات کے زیر استعمال رہتا تھا اور سکول میں ہر کوئی یہی سمجھتا تھا کہ اس کی دیوار پر آگ کے خطرے سے خبردار کرنے والا الارم نصب ہے، جو حقیقت میں خفیہ کیمرہ تھا۔

یہ خبر سامنے آنے کے بعد طالبات کے والدین سخت مشتعل ہیں اور شہر میں شدیدغم و غصے کی کیفیت ہے۔ لو گ بدمعاش سکول مالک کو عبرتناک سزا دینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ تاکیشی کے جرائم کے ثبوت اور شواہد اکٹھے کرلئے گئے ہیں اور اس کے خلاف قانونی کارروائی کا سلسلہ جاری ہے۔