اگر مردوں کو باپ بننے میں مشکل ہو تو ہفتے میں صرف 3 دفعہ یہ کام کریں، سائنسدانوں نے بہترین حل بتادیا

سی بھی شخص کے لیے اولاد دنیاکی سب سے بڑی نعمت ہوتی ہے

اگر مردوں کو باپ بننے میں مشکل ہو تو ہفتے میں صرف 3 دفعہ یہ کام کریں، سائنسدانوں نے بہترین حل بتادیا

لندن: سی بھی شخص کے لیے اولاد دنیاکی سب سے بڑی نعمت ہوتی ہے۔ جن افراد کو اولاد کے حصول میں دشواری پیش آئے وہ مہنگے علاج کروانے پر مجبور ہو جاتے ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے افزائش نسل کی کم صلاحیت والے مردوں کو اس کا انتہائی آسان علاج بتا دیا ہے جو سستا ہونے کے ساتھ موثر بھی ہے۔میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”جن مردوں کو باپ بننے میں مشکل کا سامنا ہو انہیں ہفتے میں تین بار 30منٹ کی واک کرنی چاہیے کیونکہ واک مردوں کی افزائش نسل کی صلاحیت میں اضافہ کرتی ہے۔ 6ماہ تک یہ کام کرنے سے مردوں کے باپ بننے کی صلاحیت میں نمایاں اضافہ ہو جائے گا۔“


یونیورسٹی آف شیفیلڈ کے سائنسدانوں نے اس تحقیق میں 25سے 40سال کی عمر کے 261صحت مند مردوں کا انتخاب کرکے ان کے سپرمز کا تجزیہ کیا اور پھر انہیں دو گروپوں میں تقسیم کرکے ایک کو ہفتے میں 3بار 30منٹ تک واک کرنے یا ٹریڈ مل پر جاگنگ کرنے کو کہا، جبکہ دوسرے گروپ کوانتہائی سخت ورزش کرنے کی ہدایت کی۔ 6ماہ بعد سائنسدانوں نے دونوں گروپوں کے اراکین کے سپرمز کا دوبارہ تجزیہ کیا، جس میں ثابت ہوا کہ جو لوگ بھاری ورزش کرتے رہے ان میں بھی سپرمز کا معیار بہتر ہو گیا تھا لیکن جو لوگ واک کرتے رہے ان میں اس کے نتائج کہیں بہتر تھے۔ان لوگوں میں سپرمز کی مقدار 8.3فیصد بڑھ چکی تھی، خلیوں کی حرکت پذیری میں 12.4فیصد اضافہ ہو چکا تھا اور خلیوں کی شکل میں 17.1فیصد بہتری آ چکی تھی۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ بہزاد حاجی زادہ مالکی کا کہنا تھا کہ ”ہماری تحقیق کے نتائج ثابت کرتے ہیں کہ زیادہ بیٹھے رہنے کے عادی مردوں میں سپرمز کی مقدار اور معیار میں بہتری کے لیے سستا ، آسان اور مو¿ثر طریقہ واک ہے۔“ٹیم کی رکن پروفیسر ایلن پیسی کا کہنا تھا کہ ”ہماری تحقیق میں ثابت ہوا ہے کہ مردوں کی افزائش نسل کی صلاحیت پر واک انتہائی مثبت اثرات مرتب کرتی ہے لیکن میں انہیں تجویز کروں گی کہ وہ اس دوران اپنی خوراک کا بھی خیال رکھیں، سگریٹ نوشی سے گریز کریں اور ڈھیلے زیرجامے پہنا کریں۔“