تحریک انصاف سو دنوں کے وعدے پورے کرنے میں کامیاب ہوتی نظرنہیں آتی، بلاول بھٹو

تحریک انصاف سو دنوں کے وعدے پورے کرنے میں کامیاب ہوتی نظرنہیں آتی، بلاول بھٹو
فوٹو فائل

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ حکومت کی کوئی خارجہ پالیسی نہیں ہے،حکومت کی خارجہ پالیسی بھیک مانگنے کی پالیسی ہے۔


میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) کو سیاسی انتقام کیلئے بنایا گیا، حکومت رٹ قائم نہیں رکھ سکتی تو نیا پاکستان کیوں بنایا تھا۔چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا ہے کہ تحریک انصاف سو دنوں کے وعدے پورے کرنے میں کامیاب ہوتی نظرنہیں آتی، دھمکیاں وہ دیتے ہیں جو خود کو غیر محفوظ تصور کرتے ہیں، پنجاب میں ان کا وزیر اعلیٰ انتہائی کمزور ہے، مرکزی حکومت چند ووٹوں کے فرق سے بنی ہوئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے کہا تھا کشکول توڑیں گے، خود کشی کر لوں گا قرض نہیں لوں گا، سعودی پیکج کی تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا گیا۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ملک میں افراط زر تیزی سے بڑھ رہا ہے، معیشت اور خارجہ پالیسی پر کوئی جواب نہیں دیا جاتا، اندرونی سیکیورٹی صورتحال پر یوٹرن کے سوا کچھ نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم گورنر راج جیسی دھمکیوں کو خاطر میں نہیں لاتے، پیپلز پارٹی سندھ میں پہلے سے بھی زیادہ اکثریت لے کر آئی، ہم عوام کے مینڈیٹ پر ڈاکہ ڈالنے نہیں دیں گے۔

چیئرمین پی پی نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف نے گلگت بلتستان اور کشمیر کا بجٹ کم کیا، 100 دن مکمل ہونے والے ہیں، پی ٹی آئی نے جنوبی پنجاب صوبے کا وعدہ کیا ہوا ہے، پیپلزپارٹی کا جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کیلئے بل موجود ہے، میں نے تو کہا تھا کہ پی ٹی آئی پیپلزپارٹی کے جنوبی پنجاب صوبہ بل پر اپنا نام لکھ کر پیش کردے۔

بیرونی امداد سے متعلق بلاول نے کہا کہ 'خان صاحب نے کہا تھا کہ ہم بھیک نہیں مانگیں گے، تحریک انصاف حکومت کے پاس حکومت چلانے کیلئے کوئی پالیسی نہیں۔