میزائل پروگرام پر مذاکرات کی گنجائش نہیں ہے: ایران

میزائل پروگرام پر مذاکرات کی گنجائش نہیں ہے: ایران

تہران:ایران نے دعوی کیا ہے کہ وہ اپنے میزائل پروگرام کے بعض پہلووں پرتو مذاکرات کر سکتا ہے لیکن پہلووں پر مذاکرات کی گنجائش نہیں ہے ۔


اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی کا کہنا تھا کہ اسلامی جمہوریہ ایران متعدد بار مختلف بین الاقوامی فورم میں اپنے اس موقف کا واضح طور پر اعلان کرچکا ہے اور ملکی حکام بالخصوص وزیر خارجہ نے اپنی ملاقاتوں، انٹرویو بالخصوص حالیہ دورہ نیو یارک کے موقع پر بھی واضح طور پر بتایا تھا کہ ایران اپنے دفاعی پروگرام پر ہرگز مذاکرات نہیں کرے گا اور اسے سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کے برخلاف سمجھتا ہے۔

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اس بات پر زور دیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ملکی دفاع کے لئے میزائل پروگرام کو اپنا قانونی حق سمجھتا ہے اور یقینا میزائل پروگرام کے فروغ کا عمل دفاعی حکمت عملی اور پہلے سے تیار شدہ منصوبوں کے تحت جاری رہے گا.

یاد رہے کہ بین الاقوامی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق ایران نے اقوام متحدہ کے حالیہ اجلاس کے موقع پر اپنے میزائل پروگرام کے بعض حصوں پر مذاکرات کے لئے اپنی رضامندی ظاہر کی تھی لیکن اب ایران کی طرف سے ایسے اقدام کو ماننے سے انکار کر دیاگیا ہے۔