عمران خان کی بطور وزیرِاعظم تقرری سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج

عمران خان کی بطور وزیرِاعظم تقرری سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج
فوٹو فائل

کراچی : پاکستان تحریک انصاف نے الیکشن میں واضح کامیابی حاصل کی جس کے بعد عمران خان کے وزیراعظم بننے کے خواہش پوری ہوتی دکھائی دے دہی ہے لیکن مصیبتیں ہیں کہ ختم ہونے کا نام نہیں لی رہیں۔


یہ بھی پڑھیں:سابق صدر آصف زرداری کیخلاف سوئس مقدمات دوبارہ نہیں کھولے جا سکتے: نیب

  

  عمران خان کی بحیثیت وزیرِاعظم تقرری کیخلاف درخواست سندھ ہائی کورٹ میں دائر کر دی گئی۔پاکستان تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان کی وزیرِاعظم تقرری کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا گیا۔ سابق چیف جسٹس افتخار چودھری کے سیکریٹری کی جانب سے درخواست دائر کی گئی۔ درخواست میں ایڈووکیٹ عبدالوہاب بلوچ نے موقف اختیار کیا کہ درخواست کے فیصلے تک عمران خان کو حلف اٹھانے سے روکا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:پنجاب کا ایسا وزیراعلیٰ لاؤں گا جس پر کرپشن کا کوئی الزام نہیں ہوگا، عمران خان

   

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایڈووکیٹ عبدالوہاب کا کہنا تھا کہ ہمارا موقف ہے کہ عمران خان 62 ایف ون کے تحت نااہل ہیں، اس لیے وہ پارلیمنٹ کے رکن نہیں بن سکتے۔ اس کیس کو ہم ہر فورم پر لے کر جائیں گے۔ ہم نے پٹیشن کیساتھ امریکی عدالت کا فیصلہ بھی منسلک کر دیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ عدالتِ عظمیٰ کے فیصلے تک ہم خود اس کیس کی پیروی کرتے رہیں گے۔ عمران خان جب رکن بننے کے اہل نہیں تو وزیرِاعظم کیسے بن سکتے ہیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں