اسلام آباد : پی آئی اے کے طیارے پی کے 661 کو حادثہ پیش آنے کے نتیجے میں معروف مذہبی رہنما جنید جمشید سمیت 47 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں تاہم اب ایک پائلٹ کی بہن نےانتہائی اہم   انکشاف کردیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق پی کے 661 کی تباہی کے نتیجے میں اس میں عملے اور مسافروں سمیت تمام افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں ۔ طیارہ حادثے کے بعد بہت سے لوگوں کی جانب سے اعتراضات اٹھائے جارہے ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ یہ طیارہ اڑنے کے قابل ہی نہیں تھاجبکہ تائیوان میں اس طیارے پر پابندی بھی عائد کی جاچکی ہے۔ ایسے افسردگی کے ماحول میں اب ایک پائلٹ کی بہن بھی منظر عام پر آگئی ہے اور اس نے دعویٰ کیا ہے کہ جس طیارے کو حادثہ پیش آیا ہے وہ اڑنے کے قابل ہی نہیں تھا۔

سارہ نامی ایک لڑکی نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر لکھا ہے کہ اس کا بھائی بھی پی آئی اے کا ہی ایک پائلٹ ہے اور اس نے کچھ روز پہلے تباہ ہونے والے پی آئی اے کے طیارے اے آرٹی 42 کو اڑایا تھا۔اس کے بھائی نے حادثہ پیش آنے کے بعد بتایا کہ اس طیارے کی حالت بہت ہی خراب تھی اور وہ اڑنے کے قابل ہی نہیں تھا۔.