مسقبل میں دن 24 گھنٹے کا نہیں بلکہ 25 گھنٹے کا ہو گا، سائنسدانوں نے بڑا دعویٰ کر دیا

کبھی کبھار ہمیں محسوس ہوتا ہے کہ گویا دن ختم ہونے میں ہی نہیں آرہا اور ہم سوچتے ہیں کہ شاید ایسا بوریت کی وجہ سے محسوس ہورہا ہے. لیکن آپ یہ جان کر حیران ہوں گے کہ دن واقعی لمبے ہوتے چلے جارہے ہیں اور ایک وقت ایسا بھی آئے گا کہ دن کا دورانیہ 25 گھنٹے تک پہنچ جائے گا

لندن: کبھی کبھار ہمیں محسوس ہوتا ہے کہ گویا دن ختم ہونے میں ہی نہیں آرہا اور ہم سوچتے ہیں کہ شاید ایسا بوریت کی وجہ سے محسوس ہورہا ہے. لیکن آپ یہ جان کر حیران ہوں گے کہ دن واقعی لمبے ہوتے چلے جارہے ہیں اور ایک وقت ایسا بھی آئے گا کہ دن کا دورانیہ 25 گھنٹے تک پہنچ جائے گا۔

انگلش اخبار  کی رپورٹ کے مطابق یہ حیرت انگیز انکشاف برطانیہ کی ڈرہم یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے کیا ہے۔ ایک حالیہ تحقیق میں سائنسدانوں نے 720 قبل مسیح سے لے کر حالیہ دور تک کے فلکیاتی اعدادوشمار کا جائزہ لیا۔ تحقیق کار لیزلی موریسن کہتی ہیں کہ اس جائزے سے یہ بات واضح ہے کہ گزشتہ 27 صدیوں کے دوران دن کے اوسط دورانیے میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ یہ اضافہ دو ملی سیکنڈ فی صدی ہے، یعنی اس حساب سے 20 کروڑ سال میں دن کے اوسط دورانیے میں ایک گھنٹے کا اضافہ ہوجائے گا۔
لیزلی کا کہنا ہے کہ دن کے دورانیے میں اضافے کی وجہ زمین کے مدار پر اثر انداز ہونے والی قوتیں ہیں جو رفتہ رفتہ اس کی گردش کی رفتار میں کمی کررہی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگرچہ دن کے اوسط دورانیے میں ہونے والا اضافہ بہت سست رفتار ہے لیکن بہرحال یہ دورانیہ بڑھ ضرور رہا ہے۔