چین سب سے بڑے شمسی ڈرون کی کارکردگی رواں سال ٹیسٹ کرے گا

چین سب سے بڑے شمسی ڈرون کی کارکردگی رواں سال ٹیسٹ کرے گا

بیجنگ: چین اپنے سب سے بڑے شمسی توانائی سے چلنے والے ڈرون کی کارکردگی اس سال ٹیسٹ کرے گا۔ چین کی اکیڈمی برائے ائیروسپیس ائیرڈائنامکس کے چیف انجینئر شی وین کے مطابق بوئنگ 737 مسافر طیارے کے پروں سے بھی چوڑے 40 میٹر پر رکھنے والے رینبو سیریز کے اس ڈرون نے ابھی صرف پہلی فل سکیل ٹیسٹ فلائٹ میں کامیابی حاصل کی ہے۔


یہ ڈرون دنیا کا دوسرا سب سے بڑا طاقت ور ڈرون ہے جبکہ پہلے نمبر پر ناسا کا ماڈل ہے۔ یہ دنیا بھر میں جدید ترین ٹیکنالوجی اور کارکردگی کی استعداد رکھنے والا ڈرون ہے۔ یہ ڈرون زیادہ دیر تک اور زیادہ بلندی تک پرواز کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس کی مرمت آسان اور سادہ ہے۔

چیف انجینئر نے اس کی زیادہ تفصیلات نہیں بتائیں تاہم اتنا کہا کہ یہ ڈرون 20 سے 30 کلو میٹر کی بلندی تک پرواز کر سکتے ہیں اور اس کے کروز کی رفتار 150 سے 200 کلو میٹر فی گھنٹہ تک ہے۔ یہ بغیر انسان کے پرواز کرنے والا پیشگی وارنگ دینے، فضائی ماحول سے باخبر کرنے، آفات کے بارے میں آگاہ کرنے اور موسمی حالات کی خبر دینے کیلئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں