حجاب پہننے پر بھارتی مسلمان لڑکی کو ہراساں کرنے پر فواد چوہدری کا ردعمل 

PTI, Fawad Chaudhary,

اسلام آباد: وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین نے کہا کہ مودی کے بھارت میں جو کچھ ہو رہا ہے، وہ خوفناک ہے، انڈیا کا معاشرہ غیر مستحکم قیادت میں تیزی سے زوال پذیر ہے،حجاب پہننا کسی بھی دوسرے لباس کی طرح ذاتی پسند ہے، شہریوں کو حجاب کے انتخاب میں آزادی ہونی چاہئے۔

فواد چوہدری نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ اس وقت جو کچھ مودی کی سرپرستی میں بھارت میں ہو رہا ہے وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے ،انڈیا کا معاشرہ غیر مستحکم قیادت میں تیز ی سے زوال پذیر ہے ۔

واضح رہے آج سوشل میڈیا سمیت انٹر نیشنل میڈیا پر بھارت میں مسلمان لڑکی کیساتھ جو سلوک ہوا وہ پوری دنیا نے دیکھا کہ کیسے ایک نہتے لڑکی کو صرف اس بات کی سزا دی جا رہی ہے کہ وہ حجاب کیوں پہنتی ہے ۔

ایک طرف جہاں کرناٹک کے حکومتی کالج میں حجاب کو لے کر معاملہ عدالت تک پہنچ گیا ہے وہیں کرناٹک میں سڑک سے گزرتی اکیلی طالبہ کو زعفرانی رنگ کے مفلر پہنے انتہا پسندوں کی جانب سے تنگ کرنے کی ایک ویڈیو بھی وائرل ہورہی ہے،کالج جانے والی طالبہ کو انتہا پسندوں نے ڈرایا دھمکایا لیکن طالبہ نے بھی ڈٹ کر ہراساں کرنے والوں کا مقابلہ کیا،نہتی مسلمان لڑکی ہندو انتہا پسندوں کے سامنے ڈٹ گئی۔

سوشل میڈیا پر  وائرل  ویڈیو میں کالج میں ایک لڑکی کو جے شری رام کا نعرہ لگانے والے ہجوم کی طرف سے ہراساں کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے،ہجوم میں شامل لوگ آگے بڑھے اور لڑکی کے سامنے ’جے شری رام‘ کے نعرے لگائے، لڑکی نے اس دوران مشتل ہجوم سے ڈرنے کے بجائے ان کا بھرپور مقابلہ کیا اور اونچی آواز میں ’اللہ اکبر‘ کا نعرہ لگایا۔