اتر پردیش ، مساجد، مندروں اور گرجا گھروں سے لاؤڈ اسپیکرز ہٹانے کا حکم

اتر پردیش ، مساجد، مندروں اور گرجا گھروں سے لاؤڈ اسپیکرز ہٹانے کا حکم

اتر پردیش: بھارتی ریاست اتر پردیش کی حکومت نے مساجد، مندروں اور گرجا گھروں پر بغیر اجازت لگائے گئے لاؤڈ اسپیکرز اور پبلک ایڈریس سسٹم ہٹانے کا حکم دے دیا۔


انڈین میڈیا کے مطابق ریاستی حکومت نے لاؤڈ اسپیکرز لگانے کے لیے اجازت نامے کے حصول کے لیے 15 جنوری تک کی ڈیڈ لائن دی ہے جبکہ 20 جنوری کے بعد انہیں ہٹا دیا جائے گا۔

یہ پیش رفت ایسے وقت میں ہوئی ہے جب 20 دسمبر کو الہ آباد ہائی کورٹ کے لکھنؤ بینچ نے ریاستی حکومت سے استفسار کیا تھا کہ آیا مساجد، مندروں اور گرجا گھروں میں لاؤڈ اسپیکرز اور پبلک ایڈریس سسٹم انسٹال کرنے کے لیے اجازت طلب کی گئی تھی یا نہیں۔

اپنے 10 صفحات پر مشتمل آرڈر میں عدالت نے ریاستی حکومت کو حکم دیا تھا کہ ایسے تمام مذہبی یا عوامی مقامات کی نشاندہی کی جائے جہاں بغیر اجازت لاؤڈ اسپیکرز لگائے گئے ہیں۔

دوسری جانب عدالتی حکم میں مذہبی اور عوامی مقامات کے منتظمین کو یہ ہدایت بھی کی گئی تھی کہ وہ لاؤڈ اسپیکرز یا کسی بھی پبلک ایڈرس سسٹم کو لگانے کے لیے 15 جنوری تک اجازت نامہ حاصل کریں۔ دوسری صورت میں انہیں صوتی آلودگی (ریگولیشن اینڈ کنٹرول) رولز 2000 کے تحت کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اترپردیش کی حکومت کو اس بات کی بھی ہدایت کی گئی تھی کہ وہ اُن حکومتی افسران کے خلاف بھی ایکشن لے جو عدالتی حکم کی تعمیل کروانے میں ناکام رہتے ہیں۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں