بھارتی جارحیت ہوئی تو منہ توڑ جواب ملے گا، وزیر اعظم عمران خان

بھارتی جارحیت ہوئی تو منہ توڑ جواب ملے گا، وزیر اعظم عمران خان
فائل فوٹو

چھاچھرو: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم جنگ نہیں امن چاہتے ہیں لیکن کوئی غلط فہمی میں نہ رہے، پاکستان جاگ رہا ہے، بھارت نے کچھ بھی کیا تو منہ توڑ جواب ملے گا، آخری دم تک لڑنے کے لیے تیار ہیں۔


تفصیلات کے مطابق ،وزیراعظم عمران خان نے سندھ میں   ہیلتھ کارڈ تقسیم کی تقریب سے خطاب میں کہا کہ میراحکومت  میں آنے کا مقصد لوگوں کو غربت سے نکالنے کی کوشش کرنا ہے۔ چھاچھرو پاکستان کے پسماندہ ترین علاقوں میں سے ہے جہاں 1300 بچے بھوک کی کمی کی وجہ سے موت کا شکار ہو چکے ہیں۔

 

وزیر اعظم نے چاچھرو کے عوام کیلئے ہیلتھ کارڈ کے اجرا کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ایک لاکھ بارہ ہزار خاندان مستفید ہونگے اور اس سے 7 لاکھ 20 ہزار تک کا علاج کرایا جا سکتا ہے۔ ہیلتھ کارڈ کے ذریعے کسی بھی ہسپتال میں علاج ہو سکے گا جبکہ 4 ایمبولینس دوں گا جو صرف تھرپارکر کے لئے ہوں گی۔

 

اس موقع پر عمران خان نے بھارتی وزیراعظم کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ میرے لیڈر قائداعظم محمد علی جناح کو تقسیم ہند سے پہلے ہندو مسلم کمیونٹی کا سفیر کہا جاتا تھا۔ وہ انسانوں کو تقسیم نہیں کرنا چاہتے تھے لیکن پاکستان اس لیے بنا کیونکہ ہندوستان میں اقلیتوں کو حقوق نہیں ملتے تھے جو صورتحال ابھی تک جاری ہے۔

 

عمران خان نے کہا  کہ پاکستان میں کوئی پشتون اور بلوچ کے نام پر سیاست نہیں کرتا لیکن دوسری جانب بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی سیاست اپنے ووٹ کی خاطر لوگوں کو تقسیم کرنا ہے۔ مودی کی پالیسی سے ہندوستان میں اقلیتوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے جا رہے ہیں۔ ایک وقت تھا جب ہندوستان کے لیڈر مہاتما گاندھی نے مسلمانوں کے لئے بھوک ہڑتال کی لیکن آج کے بھارت میں مودی نے جنگ کے حالات پیدا کئے۔

 

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پلوامہ حملے کے بعد ہم نے بھارت کو مدد کی آفر کی اور پائلٹ کو بھی واپس کیا کیونکہ ہم امن چاہتے ہیں لیکن اس سے کسی کو کوئی غلط فہمی نہیں ہونی چاہیے، ہم اپنے دفاع کا بھرپور حق رکھتے ہیں اور آخری دم تک لڑنے کیلئے تیار ہیں۔

 

انہوں نے کہا کہ جب سے ہماری حکومت آئی ہے تو ہم نے فیصلہ کیا ہم نیشنل ایکشن پلان پر عمل کریں گے۔ کوئی بھی ملک مسلح گرپوں کو اپنے ملک میں اجازت نہیں دیتا۔ پاکستان کی زمین پر کسی قسم کی دہشت گردی کی حکومت اجازت نہیں دے گی۔ ہمارا ہیرو بہادر شاہ ظفر نہیں بلکہ ٹیپو سلطان ہے جس نے فیصلہ کیا کہ غلامی سے بہتر موت ہے۔ اپنے ملک کی آزادی کے لئے ہم لڑنے کے لئے تیار ہیں۔

 

وزیراعظم عمران خان نے مودی سرکار کو وارننگ، امن کے پرچار اور مسائل بات چیت سے حل کرنے کا پیغام دیتے ہوئے واشگاف الفاظ میں کہا کہ ہم جنگ نہیں امن چاہتے ہیں لیکن کوئی غلط فہمی میں نہ رہے، پاکستان جاگ رہا ہے، بھارت نے کچھ بھی کیا تو منہ توڑ جواب ملے گا، آخری دم تک لڑنے کے لیے تیار ہیں۔