سعودی-کینیڈا تنازع مزید شدت اختیار کر گیا

09:38 AM, 9 Aug, 2018

ریاض: انسانی حقوق کے کارکنوں کی رہائی کے مطالبے پر سعودی عرب نے کینیڈا کو خبردار کیا ہے وہ اپنی غلطی کی تلافی کرے یا مزید کارروائی کے لیے تیار ہو جائے۔

 

سعودی عرب نے طلبا کے بعد اپنے مریضوں کو بھی کینیڈا سے کسی دوسرے ملک منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

 

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا کہ ہم نے جاری سرمایہ کاری بند نہیں کی اور نہ ہی نئی پابندی لگائی ہے۔ مسئلہ انسانی حقوق کا نہیں بلکہ قومی سلامتی کا ہے۔

 

مزید پڑھیں: بھارتی فورسز کی ریاستی دہشتگردی، 6 کشمیری شہید

دوسری جانب کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو اپنے موقف پر ڈٹ گئے ہیں اور کہا ہے کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر خاموش نہیں رہیں گے۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ جہاں بھی انسانی حقوق کا سوال آئے گا کینیڈا پر زور اور دو ٹوک انداز میں آواز اٹھائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کےساتھ تعلقات خراب کرنا نہیں چاہتے۔

 

تمام تر صورتحال کے باوجود سعودی وزیر توانائی کا کہنا ہے کہ کینیڈا کے لیے تیل کی فراہمی جاری رہے گی۔

 

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں

مزیدخبریں