ناشائستہ زبان کا استعمال، عمران ، خٹک، ایاز صادق اور فضل الرحمان کی معافی قبول

ناشائستہ زبان کا استعمال، عمران ، خٹک، ایاز صادق اور فضل الرحمان کی معافی قبول

چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے ناشائستہ زبان استعمال کرنے پر ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر سماعت کی۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے ناشائستہ زبان کے استعمال کے کیس میں عمران خان، پرویز خٹک، ایاز صادق اور مولانا فضل الرحمان کی غیر مشروط معافی قبول کر لی۔

 

چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے عمران خان، سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک، اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق اور مولانا فضل الرحمان کے خلاف ناشائستہ زبان استعمال کرنے پر ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر سماعت کی۔ ایاز صادق کے وکیل کامران مرتضیٰ نے مؤقف اپنایا کہ وہ اپنے مؤکل کی جانب سے دست بستہ معافی مانگتے ہیں۔

 

مزید پڑھیں: عمران خان نے مخالفین کو گدھا کہنے پر معافی مانگ لی


اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر کی ہدایت پر ایاز صادق کا ویڈیو کلپ چلایا گیا۔ چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ دیکھیں ایاز صادق کہہ رہے ہیں کہ الیکشن کمیشن کی اوقات کیا ہے۔ اس پر ایاز صادق کے وکیل نے ایک بار پھر معافی مانگی۔

 

جب کہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے وکیل بابر اعوان اور پرویز خٹک نے بھی ناشائستہ زبان کے استعمال پر الیکشن کمیشن سے معافی مانگی۔ مولانا فضل الرحمان کے وکیل نے بھی اپنے مؤکل کی جانب سے معذرت کی جس پر چاروں رہنماؤں کے خلاف کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا گیا۔

 

الیکشن کمیشن نے کچھ دیر بعد فیصلہ سناتے ہوئے چاروں رہنماؤں کی غیر مشروط معافی قبول کر لی اور مستقبل میں ایسی زبان استعمال نہ کرنے کی وارننگ دی ہے۔ الیکشن کمیشن نے فیصلہ سنانے کے ساتھ ہی پرویز خٹک کی کامیابی کا نوٹی فکیشن بھی جاری کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

 

یہ خبر بھی پڑھیں: ضمنی انتخابات میں تارکین وطن کو ووٹ کا حق دینے کا اعلان


الیکشن کمیشن نے انتخابی مہم کے دوران ایازصادق، پرویز خٹک اور مولانا فضل الرحمان کے خلاف ناشائستہ زبان کے استعمال کا از خود نوٹس لیا تھا۔ واضح رہے کہ الیکشن کمیشن نے پرویز خٹک کی کامیابی کو ان کے کیس سے مشروط کر رکھا تھا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں