خالد شیخ نے اوباما کے نام خط میں ایسا کیا کہہ دیا کہ سارا امریکہ سیخ پا ہو گیا ۔۔۔!!!

خالد شیخ نے اوباما کے نام خط میں ایسا کیا کہہ دیا کہ سارا امریکہ سیخ پا ہو گیا ۔۔۔!!!

نیو یارک: امریکہ میں گیارہ ستمبر 2001ءکے حملوں کے مبینہ ماسٹر مائند خالد شیخ محمد نے سابق امریکی صدر بارک اوباما کے نام اپنے ایک خط میں ان حملوں کو امریکی خارجہ پالیسی کا نتیجہ قرار دیدیا۔


خالد شیخ محمد کی جانب سے 18 صفحات پر مبنی اس خط میں صدر اوباما کو ظالم اور جارح ملک کا رہنما اور سانپ کا سر قرار دیا گیا۔ خالد شیخ محمد نے یہ خط 2014ء میں لکھنا شروع کیا تھا۔ اس خط پر آٹھ جنوری 2015ء کی تاریخ درج ہے جب کہ یہ خط بارک اوباما کی مدت صدارت کی تکمیل سے کچھ روز قبل وائٹ ہائو س پہنچا۔

اس خط میں لکھا گیا ہے، گیارہ ستمبر کو یہ ہم نہیں تھے، جنہوں نے جنگ شروع کی بلکہ یہ تم اور ہمارے ملک میں تمہارے ڈکٹیٹرز تھے۔ اس خط میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکا کے ہاتھ غزہ میں مسلمانوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔

اس خط کی ایک نقل وکیل صفائی ڈیوڈ نیوین نے جاری کی ہے تاہم یہ خط فی الحال امریکی فوج کی گوانتانامو کی سماعتوں سے متعلق ویب سائٹ پر شائع نہیں کیا گیا ہے۔