آئی ایم ایف پروگرام سے عالمی سطح پر معاہدے کرنے میں آسانی ہو گی، وزارت خزانہ

 آئی ایم ایف پروگرام سے عالمی سطح پر معاہدے کرنے میں آسانی ہو گی، وزارت خزانہ
موسم بہار میں آئی ایم ایف کے ایگزیکیٹو بورڈ اجلاس سے پہلے معاملات طے ہو جائیں گے، وزارت خزانہ۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق آئی ایم ایف اور پاکستان کے درمیان قرض فراہمی کے لیے ایک مرتبہ پھر رابطہ ہوا ہے تاہم دونوں پھر کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے۔


ذرائع نے بتایا کہ اختلاف میں کمی ضرور ہوئی ہے لیکن مذاکرات نتیجہ خیز نہیں ہو سکے۔

وزارت خزانہ کے حکام نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ موسم بہار میں آئی ایم ایف کے ایگزیکیٹو بورڈ اجلاس سے پہلے معاملات طے ہو جائیں گے۔

ترجمان وزرت خزانہ ڈاکٹر خاقان نجیب کے مطابق آئی ایم ایف پر واضح کر دیا ہے کہ پاکستان کو پروگرام لینے کی کوئی جلدی نہیں تاہم اچھا پروگرام ملتے ہی معاہدہ کر لیا جائے گا۔

ترجمان وزارت خزانہ نے بتایاکہ آئی ایم ایف سے مذاکرات مثبت رہے ہیں۔ ترجمان کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف کا پروگرام صرف ڈالرز کے حصول کیلئے نہیں لے رہے بلکہ آئی ایم ایف کا پروگرام ملنے سے بین الاقوامی سطح پر معاہدے کرنے میں آسانی ہو گی۔

 گزشتہ دنوں بھی وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا تھا کہ آئی ایم ایف سے قرض لینے کے معاملات آخری مراحل میں داخل ہوگئے ہیں، کوشش ہے جلد سے جلد یہ معاہدہ ہوجائے لیکن چاہتے ہیں کہ جلدی میں ایسا معاہدہ نہ ہو جو معیشت اور عوام کی بہتری میں نہ ہو۔

واضح رہے کہ مالی امداد کے لیے پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کا پہلا دور 7 نومبر سے 20 نومبر تک ہوا جو کہ بے نتیجہ رہا تھا۔