ملک بنانے والوں کی اولاد کو جیل جانا پڑا ہے، سعد رفیق

ملک بنانے والوں کی اولاد کو جیل جانا پڑا ہے، سعد رفیق
سیاستدانوں کو ایک دوسرے کو چور، چور کہنے کے بجائے اصل ایشوز پر بات کرنا ہو گی، سعد رفیق۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ حکومت ملک چلانے کے بجائے اپوزیشن بھگانے کے چکر میں ہے اور ہمیں پکڑ پہلے لیا گیا اور ثبوت بعد میں ڈھونڈے جا رہے ہیں۔


ریلوے خسارہ کیس میں پیشی کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ہمارے خلاف ثبوت اب ڈھونڈے نہیں بلکہ گھڑے جا رہے ہیں اور پاکستان میں روایت ہے کہ ملک بنانے والوں کی اولاد کو جیل جانا پڑا ہے ۔ اگر آپ پاکستان سے پیار یا جمہوریت کی بات کریں تو آپ کے ساتھ ایسا ہی ہوگا۔

سعد رفیق کا کہنا تھا کہ سیاستدانوں کو ایک دوسرے کو چور، چور کہنے کے بجائے اصل ایشوز پر بات کرنا ہو گی۔

اس سے قبل سپریم کورٹ میں ریلوے خسارہ کیس کی سماعت شروع ہوئی تو خواجہ سعد رفیق کو کمرہ عدالت میں دیکھتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا یہ خواجہ صاحب کو ہم تو نہیں بلاتے یہ کیوں آتے ہیں اور ہم نے آڈیٹر جنرل سے جواب مانگا تھا۔ جس پر سعد رفیق کے وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا آڈیٹر جنرل نے لاہور میں جواب جمع کرایا ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا اگلے ہفتے جواب آجائے تو کیس سنیں گے۔عدالت نے ریلوے خسارہ کیس کی سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کر دی۔