اسلامی فوجی اتحاد کی قیادت کے لیے راحیل شریف کو اجازت مل جانی چاہیے، اسحاق ڈار

اسلامی فوجی اتحاد کی قیادت کے لیے راحیل شریف کو اجازت مل جانی چاہیے، اسحاق ڈار

اسلام آباد:  وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ اسلامی فوجی اتحاد کی قیادت کے لیے راحیل شریف کو اجازت مل جانی چاہیے سعودی عرب اجازت مانگ رہا ہے تو انشاء اللہ مل جانی چاہیے وزیر اعظم اصولوں پر فیصلہ کرتے ہیں امید ہے اجازت دے دیں گے.


ایک نجی ٹی وی کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا کہ فوجی عدالتوں کی توسیع پر کافی میٹنگز ہوئی ہیں پیپلز پارٹی کے 9میں سے 3نکات کو حل کر لیا گیا ہے اور باقی چھ پر بات چل رہی ہے پیپلز پارٹی فوجی عدالتوں کی مدت دو سال رکھنے پر رضا مند ہو گئی ہے اور فوجی عدالت میں سیشن جج بٹھانے کی تجویز سے بھی دستبردار ہوگئی ہے حکومت فوجی عدالتوں پر جے یو آئی ف کو منانے کی کوشش کرے گی ہماری کوشش ہو گی فضل الرحمان ہمارے ساتھ رہیں فوجی عدالتوں کی بحال کا بل آج جمعہ کو پارلیمینٹ میں پیش کیا جائے گا وہاں سے منظوری کے بعد سینیٹ میں پیش کیا جائے گا کوشش یہی ہے کہ یہ بل اتفاق رائے سے پاس ہو فوجی عدالتوں کے معاملے پر کافی میٹنگز ہوئی ہیں اب اس پر مذید وقت نہیں ہے اسحاق ڈار نے کہا کہ دہشتگردی کے مقدمات کے لیے خصوصی عدالتوں کے لیے نیا قانون بنایا جائے گا. انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر کافی محنت ہوئی ہے اور اس پر عملدرآمد میں بھی پیشرفت ہوئی ہے ہم نے پارلیمانی کمیٹی اور نیشنل سیکورٹی کا فیصلہ کر لیا گیا ہے اس کمیٹی میں نیب پر عملدرآمد اور نئی قانون سازی کے معاملات زیر بحث لائے جائیں گے یہ قومی ضرورت ہے اگر یہ کمیٹی اپنا فعال کردار ادا کرے گی جیسے کرنا چاہیے تو پھر یہ سارے کام ہم مانیٹر کر سکیں گے کہ یہ وقت پر ہوجائیں تا کہ دو سال کے بعد مذید توسیع کی ضرورت نہ پڑے.

ایک سوال پر وزیر خزانہ نے کہا کہ افغان بارڈر پر باڑ لگانے کا اصولی فیصلہ ہو چکا ہے یہ فیصلہ پچھلے ہفتہ وزیر اعظم کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں ہوا جس میں آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی نے شرکت کی دہشتگردی کے خاتمے کے لیے پاکستان اور افغانستان دونوں نے ملکر کام کرنا ہے حکومت پاکستان نے افغانستان کو 76ایسے لوگوں کی فہرست دی ہے جو وہاں بیٹھکر پاکستان میں کاروائیوں میں ملوث ہیں لاہور، سیہون شریف، پشاور حیات آباد، کراچی سماء پر حملہ کروایا ان کے شواہد موجود ہیں ہماری معلومات کے مطابق اس کے پیچھے ایک سے زیادہ ملکوں کا ہاتھ ہے پاکستان اور افغانستان دونوں ملکوں کو یہ سمجھ لینا چاہیے کہ ہمارا امن مشترکہ ہے اگر افغانستان میں امن نہیں ہو گا تو پاکستان میں امن نہیں ہو گااگر سرحد پار سے کاروائیاں ہوں گی تو پاک فوج نے کاروائی کی بھی ہے اور آئندہ بھی کرے گی ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ سمجھوتہ ایکسپریس واقعہ کو دفتر خارجہ دیکھ رہا ہے انہوں نے کہا کہ ڈان لیکس کافی حساس معاملہ رہا ہے چاہے تو یہ کہ ملکی معاملات پر جب بات ہوتی ہے تو اگلے دن اخبار میں نہ ہو ڈان لیکس پر کمیٹی تقریباً کام ختم کرنے کے قریب ہے توقع ہے کہ ڈان لیکس پر رپورٹ اگلے چند دنوں میں آجائے گی .

انہوں نے کہا کہ حکومت راحیل شریف کو اسلامی فوجی اتحا د کا سربراہ بنائے جانے کا اصول پر فیصلہ کرے گا اور انشاء اللہ بہت جلد فیصلہ ہو جائے گا سعودی عرب کی یہ اس وقت کی خواہش ہے جب راحیل شریف آرمی چیف تھے اگر پاکستان کا ریٹائرڈ آرمی چیف مسلمان ملکوں کی افواج کا سربراہ بن کر دہشتگردی کے خلاف اپنا کوئی کردار ادا کر سکتا ہے تو اس میں کوئی مضائقہ نہیں میرے نزدیک یہ ایک مثبت کام ہے مجھے یقین ہے کہ وزیر اعظم اصولوں پر اس کا جلدی فیصلہ کریں گے اگر سعودی عرب راحیل شریف کی تعیناتی کے لیے حکومت پاکستان سے اجازت مانگ رہی ہے تو مجھے قوی امید ہے کہ اجازت مل جائے گی وزیر خزانہ نے کہا کہ پاناما کیس پر سپریم کورٹ سے انصاف کی امید ہے فوٹو کاپیوں اور پسند پر فیصلے نہیں ہوتے بہت پرامید ہوں فیصلہ ٹھیک آجائے گا ۔