وزیراعظم کی تقرری کیخلاف درخواست سندھ ہائیکورٹ میں سماعت کیلئے مقرر

وزیراعظم کی تقرری کیخلاف درخواست سندھ ہائیکورٹ میں سماعت کیلئے مقرر

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی تقرری کے خلاف دائر درخواست سماعت کے لیےمقرر کر لی۔ سندھ ہائی کورٹ میں دائر کی گئی پٹیشن میں درخواست گزار مولوی اقبال حیدر نے موقف اختیار کیا کہ سپریم کورٹ نے قرار دیا تھا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف صادق و آمین نہیں اور 28 جولائی کے بعد سے نواز شریف کے تمام فیصلے غیر قانونی قرار دے دیئے گئے۔


مزید پڑھیں: مرغیوں کو دی جانے والی فیڈ سے متعلق رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع

درخواست گزار کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو بھی نواز شریف نے بطور وزیراعظم نامزد کیا تھا اور یہ تقرری انہوں نے اپنی نااہلی کے بعد کی۔ درخواست میں مزید کہا گیا کہ مفاد عامہ سے متعلق آئینی درخواست کسی بھی ہائی کورٹ میں سنی جا سکتی ہے۔ درخواست کی سماعت پیر (12 مارچ) کو سندھ ہائی کورٹ میں ہو گی۔

یاد رہے کہ 28 جولائی 2017 کو پاناما کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے نواز شریف کو وزارت عظمیٰ کے عہدے کے لیے نااہل قرار دے دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: زینب کے قاتل عمران کے اہلخانہ مقتولہ کے لواحقین کو ہراساں کرنے لگے

دوسری جانب گذشتہ ماہ الیکشن ایکٹ میں ترمیم سے متعلق کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے نواز شریف کو مسلم لیگ (ن) کی صدارت کے لیے بھی نااہل قرار دے دیا اور بحیثیت مسلم لیگ نواز کے صدر ان کے تمام اقدامات، احکامات اور ہدایات کالعدم قرار دے دی گئیں۔ یہ بھی واضح رہے کہ شاہد خاقان عباسی نے یکم اگست 2017 کو وزیراعظم پاکستان کے عہدے کا حلف اٹھایا تھا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں