ناروے میں خطرناک بیماری کی روک تھام کے لیے 2000 قطبی ہرنوں کو ہلاک کرنے کا فیصلہ

ناروے میں خطرناک بیماری کی روک تھام کے لیے 2000 قطبی ہرنوں کو ہلاک کرنے کا فیصلہ

اوسلو :  ناروے میں حکام نے 2ہزار رینڈیرز (قطبی ہرنوں) کو ہلاک کرنے کی اجازت دے دی ہے۔


وزارت زراعت کی جانب سے اعلان کردہ یہ اقدام ملک میں سامنے آنے والی ایک بیماری کو روکنے کی غرض سے کیا جا رہا ہے۔اس بیماری کا نام سی ڈبلیو ڈی (chronic-wasting disease)(CWD )ہے۔ یہ شمالی امریکا میں معروف بیماری ہے تاہم ناروے میں ریکارڈ کیے جانے والے کیس یورپ میں پہلی مرتبہ سامنے آئے ہیں.

اس بیماری کے نتیجے میں متاثرہ جانور کا دماغ اسفنج دار ہو جاتا ہے اور پھر وزن میں کمی آنے کے بعد وہ مر جاتا ہے۔یورپ میں پہلی مرتبہ اس بیماری کا انکشاف گزشتہ برس ناروے میں ہوا تھاجس کے نتیجے میں حکام نے ملک کے جنوب مغربی پہاڑی علاقے میں مذکورہ بیماری میں مبتلا جانوروں پر قابو پانے کا فیصلہ کیا۔