پیوٹن کا دورہ ابہازیا; یوکرین اور جارجیا کی طرف سے دورے کی مذمت

 پیوٹن کا دورہ ابہازیا; یوکرین اور جارجیا کی طرف سے دورے کی مذمت

ماسکو:  روس کے صدر ولادی میر پیوٹن نے جارجیا سے یک طرفہ طور پر اعلان آزادی کرنے والے ملک ابہازیا کا دورہ کیا۔

ترک خبررساں ادارے کے مطابق پیوٹن نے دورہ ابہازیا کے دوران اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ابہازیا اور روس کے درمیان ایک خصوصی تعلق ہے اور ہم سکیورٹی اور سیاحت جیسے شعبوں میں باہمی تعاون میں اضافہ کریں گے۔

پیوٹن نے کہا ہے کہ ہم فوجی تعاون کی فراہمی کے لئے تیار ہیں اور ابہازیا کی ضمانت کو جاری رکھیں گے۔ پیوٹن نے یہ دورہ امریکہ کے نائب صدر مائیک پینس کی جارجیا کے دارالحکومت تبلیس میں ملاقاتوں اور مذاکراتوں کے  ایک ہفتے بعد  کیا ہے۔

یوکرین کے صدر پیٹرو پورو شینکو اور جارجیا کے صدر گیورگی مارگویلاشویلی نے پیوٹن کے، بین الاقوامی برادری کی طرف سے تسلیم نہ کئے گئے اور یک طرفہ طور پر اعلان آزادی کرنے والے ملک ابہازیا کا دورہ کرنے کی مذمت کی ہے۔

یوکرین کے صدارتی پریس مرکز   کی طرف سے جاری کردہ بیان میں پوروشینکو نے مارگویلاشویلی کے ساتھ ٹیلی فونک رابطہ کیا  اور جارجیا کے خلاف روس کی حملہ آور پالیسی کی 9 ویں سالانہ یاد کے موقع پر جارجین عوام کے ساتھ تعاون کا اظہار کیا ہے۔

پوروشینکو نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ یوکرین جارجیا   کی زمینی سالمیت  کی حمایت کرتا ہے اور حمایت کرنا جاری رکھے گا۔

مصنف کے بارے میں