طیب اردوان نے نئے صدارتی نظام کے تحت عہدے کا حلف اٹھا لیا

طیب اردوان نے نئے صدارتی نظام کے تحت عہدے کا حلف اٹھا لیا

ترکی میں وزیر اعظم کا عہدہ ختم کر دیا گیا ہے۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ دی ٹیلی گراف

انقرہ: ترک صدر طیب اردوان نے دوسری مدت صدارت کے لئے نئے صدارتی نظام کے تحت عہدے کا حلف اٹھا لیا جسے اپوزشین کی جانب سے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔  ترکی میں وزیر اعظم کا عہدہ ختم کر دیا گیا ہے، نئے نظام کے تحت ترک صدر نے اپنی پہلی کابینہ کا اعلان بھی کر دیا ۔

 

انہوں نے اپنے داماد بیرات البیراک کو وزیر خزانہ اور مالی امور نامزد کر دیا جبکہ مولود چاوش اوگلو بدستور وزیر خارجہ مقرر کئے گئے ہیں ۔

 

مزید پڑھیں: وزیراعظم سے اختلافات پر برطانوی وزیر خارجہ مستعفیٰ

40  سالہ نئے وزیر خزانہ اردوان کی سب سے بڑی بیٹی کے شوہر ہیں جو پہلے وزیر توانائی بھی رہ چکے ہیں۔ اس خبر پر ترک کرنسی لیرا کی قدر میں 2 اعشاریہ 4 فیصد کمی واقع ہوئی۔

 

صدر طیب اردوان کے دست راست اور ایمر جنسی ایجنسیز کے سابق سر براہ فواد اوکتائے نائب صدر مقرر جبکہ آرمی چیف جنرل حلوصی آقار وزیر دفاع مقرر ہوئے ہیں۔ دوسری جانب مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے ترک صدر طیب اردوان کو عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دی ہے۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں