سری دیوی کی موت حادثاتی نہیں بلکہ قتل تھا، رشی راج سنگھ

سری دیوی کی موت حادثاتی نہیں بلکہ قتل تھا، رشی راج سنگھ
بہت سارے ثبوت ایسے ہیں جس سے ثابت ہو سکتا ہے کہ سری دیوی کی موت ایک حادثہ نہیں بلکہ قتل تھا، رشی راج سنگھ۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ انڈین میڈیا

نیو دہلی: بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق کیرالا جیل کے ڈی جی پی  رشی راج سنگھ نے ’کیرالا کوموڈی‘ نامی اخبار میں لیجنڈ اداکارہ سری دیوی کی موت کے حوالے سے ایک طویل مضمون شائع کیا ہے جس میں انہوں نے اپنی اور آنجہانی فارنسک سرجن ڈاکٹر عما دھتن کی گفتگو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر نے مجھے بتایا کہ سری دیوی کی موت قتل ہو سکتی ہے۔


جس پر رشی راج سنگھ نے ڈاکٹر سے وجہ پوچھی تو انہوں نے کچھ باتوں کی نشاندہی کرتے ہوئے بتایا کہ بہت سارے ثبوت ایسے ہیں جس سے ثابت ہو سکتا ہے کہ سری دیوی کی موت ایک حادثہ نہیں بلکہ قتل تھا۔

ڈی جی پی نے اپنے مضمون میں لکھا کہ ڈاکٹر عما دھتن کے مطابق اگر سری دیوی بہت زیادہ نشے میں بھی ہوتیں تو تب بھی وہ باتھ ٹب میں موجود ایک فٹ گہرے پانی میں ڈوب کر نہیں مر سکتی تھیں۔

انہوں نے اپنے مضمون میں لکھا کہ بغیر کسی کے زور دیئے ایک شخص کی ٹانگیں یا سر باتھ ٹب میں نہیں ڈوب سکتا اور جبکہ باتھ ٹب میں پانی بھی ایک فٹ ہو۔

خیال رہے کہ 54 سالہ بھارتی اداکارہ سری دیوی کی موت گزشتہ سال 24 فروری کو دبئی کے ایک ہوٹل میں ڈوب جانےکے باعث ہوئی تھی ۔ سری دیوی کی موت کے فوراً بعد ہی دبئی حکومت کی جانب سے بھی بیان جاری کر دیا گیا تھا کہ ان کی موت حادثاتی طور پر باتھ ٹب میں ڈوب کر ہوئی ہے۔