شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کی عبوری ضمانت میں 2 اگست تک توسیع

شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کی عبوری ضمانت میں 2 اگست تک توسیع
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: سیشن عدالت نے پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمد شہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ (ن) کے نائب صدر محمد حمزہ شہباز شریف کی منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانت میں دو اگست تک توسیع کر دی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق لاہور کی سیشن عدالت میں شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کی عبوری ضمانتوں میں توسیع سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی جس دوران شہباز شریف اور حمزہ شہباز عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو دوبارہ ایف آئی اے کی تفتیشی ٹیم کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی جبکہ ایف آئی کو شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو ہراساں نہ کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔

ایف آئی اے کے وکیل نے دوران سماعت عدالت کو بتایا کہ شہبازشریف اور حمزہ شہباز نے تفتیش جوائن کر لی ہے تاہم دونوں ملزمان سے ابھی تفتیش مکمل نہیں ہوئی اور ابھی ہمارے پاس مکمل ریکارڈ آیا نہیں آیا لہٰذا دونوں ملزمان کی تفتیش زیر سماعت ہے، اس پر شہباز شریف کے وکیل نے کہا کہ شہباز شریف اور حمزہ نیب کے کیسز میں پیش ہورہے ہیں اس لئے دوبارہ تفتیش میں پیش نہیں ہوئے۔ 

دوران سماعت شہباز شریف نے سیشن جج کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں نے کوئی کرپشن نہیں کی اور میں بے قصور ہوں، شوگر ملز میں اپنی فیملی کے اربوں روپے کا نقصان کیا، فیملی کے افراد کی مخالفت کرتے ہوئے عوام کو سستی چینی فراہم کی جبکہ چین سے درخواست کر کے سستے بجلی گھر بھی لگوائے۔ 

شہبازشریف نے عدالت کو بتایا کہ ایف آئی اے کی تفتیشی ٹیم نے میرے ساتھ بدتمیزی کی اور مجھے ہراساں کیا، ایف آئی اے کے افسران بلند آواز میں ہنس کر میرا مذاق اڑاتے رہے اور میرے ساتھ نامناسب گفتگو کی، جب مجھ سے برداشت نہ ہوا تو میں بولا میرے ساتھ ایسا کیوں کررہے ہو؟ 

عدالت نے ایف آئی اے کو شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو ہراساں کرنے سے روکتے ہوئے دونوں ملزمان کی عبوری ضمانت میں دو اگست تک توسیع کرتے ہوئے دونوں کو ایف آئی اے کی تفتیشی ٹیم کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی جبکہ ایف آئی اے کو شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کو ہراساں نہ کرنے کا حکم بھی دیا۔