جے آئی ٹی ممبران کے رویے کیخلاف سعید احمد کا سپریم کورٹ کو خط

جے آئی ٹی ممبران کے رویے کیخلاف سعید احمد کا سپریم کورٹ کو خط

اسلام آباد: نیشنل بنک کے صدر سعید احمد نے رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط لکھ دیا۔ خط کے متن میں جے آئی ٹی ممبران کے رویے کی شکایت کی گئی ہے۔پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی ارکان نے پانچ گھنٹے تک انتظار کروایا گیا اور کچھ ممبران کا رویہ دھمکی آمیز ہے۔ ان ممبران کا یہ رویہ سپریم کورٹ کے حکم کی نفی کرتا ہے۔ خط میں مزید کہا گیا کہ لکھے بیان پر دستخط کرنے کے لئے دباؤ ڈالا گیا جس کا سپریم کورٹ نوٹس لے۔


پاناما کیس کی تفتیش کیلئے سپریم کورٹ کے خصوصی بینچ نے ایف آئی اے کے واجد ضیاء کی سربراہی میں جے آئی ٹی تشکیل دی تھی۔ جے آئی ٹی 2 ماہ میں سپریم کورٹ کی جانب سے پاناما فیصلے میں اٹھائے گئے پندرہ سوالوں کے جواب تلاش کریں گے۔

واضح رہے کہ سپریم كورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ 20 اپریل کو سناتے ہوئے معاملے كی مزید تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دینے کا حکم دیا تھا اور اس ٹیم کی تشکیل کے لیے 6 اداروں سے نام طلب کیے تھے اور قرار دیا تھا کہ عدالت ناموں کا جائزہ لے کر خود جے آئی ٹی تشكیل دے گی جو 15 روز بعد اپنی عبوری رپورٹ عدالت میں پیش كرے گی جب كہ 60 روز میں تحقیقات مکمل کر کے اپنی حتمی رپورٹ سپریم کورٹ کے بینچ کے سامنے جمع کرائے گی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں