پاکستان میں تمباکو نوشی سے ہر سال ایک لاکھ افراد کی ہلاکت

کراچی: تمباکو نوشی سے جہاں دنیا بھر میں لوگ ہلاک ہورہے ہیں تو وہی ہر سال پاکستان میں بھی تقریباً ایک لاکھ سے زائد افراد تمباکو سے ہونے والی بیماریوں میں مبتلا ہوکر ہلاک ہوجاتے ہیں۔

پاکستان میں تمباکو نوشی سے ہر سال ایک لاکھ افراد کی ہلاکت

کراچی: تمباکو نوشی سے جہاں دنیا بھر میں لوگ ہلاک ہورہے ہیں تو وہی ہر سال پاکستان میں بھی تقریباً ایک لاکھ سے زائد افراد تمباکو سے ہونے والی بیماریوں میں مبتلا ہوکر ہلاک ہوجاتے ہیں۔


اقوامِ متحدہ کے ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں تمباکو نوشی سے ہونے والی بیماریوں سے بڑی تعداد میں لوگ ہلاک ہوتے ہیں۔ ان بیماریوں میں دل کے امراض، فالج کا حملہ اورکینسر شامل ہیں۔جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طارق رفیع اور جناح اسپتال میں ای این ٹی یونٹ کے سربراہ ڈاکٹر محمد عثمان کے مطابق پاکستان دنیا کے ا±ن 15 ممالک میں شامل ہے جہاں تمباکوکی پیداوار سب سے زیادہ ہوتی ہے، پاکستان میں ایک لاکھ سے زائد افراد ہر سال تمباکو سے ہونے والی بیماریوں میں مبتلا ہوکر ہلاک ہوجاتے ہیں،ان میں منہ، حلق، سانس کی نالی اور پھیپھڑوں کا کینسر شامل ہے۔

ماہرین صحت نے کہا کہ چھالیہ اور پان کے ساتھ تمباکو کھانے کے عادی افراد میں منہ، غذائی نالی اور معدے کے سرطان کی بیماریاں عام ہیں تاہم رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کسی نہ کسی شکل میں تمباکو نوشی کرنے والوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔واضح رہے کہ حکومت کی جانب سے ملکی سطح پر سگریٹ نوشی یا تمباکو پر قابو پانے کیلیے 2012ءمیں تمباکونوشی ایکٹ لاگوکیا گیا تھا جس کے مطابق پبلک مقامات پر سگریٹ نوشی ممنوع قراردی گئی ہے۔