عمران خان نے دوستوں کو نوازنے کیلئے خزانے کو 1000 ارب کا نقصان پہنچایا: بلاول بھٹو

عمران خان نے دوستوں کو نوازنے کیلئے خزانے کو 1000 ارب کا نقصان پہنچایا: بلاول بھٹو
کیپشن:   عمران خان نے شرح سود میں ردوبدل کرکے خزانے کو 1000 ارب کا نقصان پہنچایا: بلاول بھٹو سورس:   file

اسلام آباد: چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا انکشاف کیا کہ عمران خان کی حکومت نے صرف شرح سود میں ردوبدل کرکے قومی خزانے کو ایک ہزار ارب روپے تک کا نقصان پہنچایا ۔

اسلام آباد سے جاری بیان میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے  کہا کہ  پی ٹی آئی کا بجٹ عوامی نہیں بلکہ سیاسی ہے، پاکستان پیپلزپارٹی سلیکٹڈ حکومت کے سلیکٹڈ بجٹ کو ماننے سے انکار کرتی ہے۔عمران خان کی حکومت نے صرف شرح سود میں ردوبدل کرکے قومی خزانے کو ایک ہزار ارب روپے تک کا نقصان پہنچایا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے مخصوص سرمایہ داروں کے دو ارب ڈالر بیرون ملک سے منگوائے اور شرح سود 13.25 فیصد مقرر کرکے اپنے دوستوں کو فائدہ پہنچا کر پیسے واپس کردئیے۔عمران خان بتائیں کہ یہ دو ارب ڈالر کن سرمایہ دار دوستوں کے تھے کہ جن کو فائدہ پہنچانے کے لئے قومی خزانے کو 300 ارب روپے کا نقصان پہنچایا گیا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف نے شرح سود 12 فیصد تک رکھنے کا کہا تھا اور عمران خان کی حکومت نے اس کو 13.25 فیصد بڑھا کر چند سرمایہ داروں کو فائدہ پہنچایا۔پاکستان انوسٹمنٹ بونڈز کی شرح سود اچانک تبدیل کرکے عمران خان کی حکومت نے چند مخصوص سرمایہ داروں کو 700 ارب روپے تک کا فائدہ پہنچایا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان انوسٹمنٹ بونڈ کے 700 ارب روپے اور دو ارب ڈالر پر 300 ارب روپے اور مجموعی طور پر ایک ہزار ارب روپے کی عمران خان کی چوری پکڑی گئی ہے۔پی ٹی آئی حکومت کی اس میگا کرپشن پر پارلیمانی انکوائری کی جائے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ  قومی خزانے پر ڈاکہ مارنے والے عمران خان اور ان کے ساتھیوں کو ملک سے بھاگنے نہیں دیا جائے گا۔پاکستان پیپلزپارٹی اس میگا کرپشن اسکینڈل کے ایک ایک روپے کا عمران خان سے حساب لے گی،۔