وزیراعظم اور ایرانی صد ر کا ٹیلیفونک رابطہ،عمران خان نے روحانی کو پاک بھارت کشیدگی امور پر اعتماد میں لیا

وزیراعظم اور ایرانی صد ر کا ٹیلیفونک رابطہ،عمران خان نے روحانی کو پاک بھارت کشیدگی امور پر اعتماد میں لیا
تصویر بشکریہ ٹوئٹر

اسلام آباد:وزیراعظم پاکستان عمران خان اور ایران کے صدر حسن روحانی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا ہے جس میں دونوں ممالک کا انسداد دہشتگردی کیلئے انٹیلی جنس روابط مربوط بنانے کیلئے اتفاق کیا گیا جبکہ خطے کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔


تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان اور ایرانی صدر حسن روحانی کے درمیان ٹیلی فون پر رابطہ ہوا۔ بات چیت میں علاقائی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر اعظم نے پاک بھارتی کشیدگی، بھارتی جارحیت اور پاکستانی امن پسندی سے متعلق ایرانی صدر کو بریف کیا اور بتایا کہ کس طرح پاکستان نے اپنی کوششوں سے اس کشیدگی کو کم کیا۔

دونوں رہنماؤں نے دو طرفہ تعلقات کے فروغ کا اعادہ کیا اور اتفاق کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنایا جائے۔ ایرانی صدر نے کہا کہ پاکستان اور ایران پڑوسی اور برادر اسلامی ممالک ہیں دو طرفہ تعلقات میں اضافہ چاہتے ہیں۔عمران خان نے ایران میں حال ہی میں ہونے والے دہشت گردانہ حملے پر اظہار افسوس کیا جس میں 27 ایرانی گارڈز جاں بحق ہوگئے تھے۔

دونوں رہنماؤں نے دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے انٹیلی جنس ایجنسیز میں رابطے مربوط بنانے پر بھی اتفاق کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے ایرانی صدر کو بھارت کے ساتھ حالیہ کشیدگی کے متعلق امور پر اعتماد میں لیا۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان موجودہ صورتحال مذاکرات کے ذریعے بہتر بنانے کی بھرپور کوشش کررہا ہے اور موجودہ حالات میں برادر ملک ایران کا کردار بہت اہم ہے۔

وزیراعظم نے ایرانی قیادت کا مقبوضہ جموں وکشمیر کے عوام سے اصولی حمایت پر شکریہ ادا کیا۔ ایرانی صدر حسن روحانی کا کہنا تھا کہ پاکستان اور ایران 2 ہمسائے اور برادر ملک ہیں جن کے درمیان تاریخی، ثقافتی اور مذہبی قریبی تعلقات ہیں، ان تعلقات سے خطے میں استحکام اور معاشی ترقی مرکزی مقام رہےگا۔