خارجہ پالیسی کے محاذ پر پاکستان کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہے، شاہ محمود قریشی

خارجہ پالیسی کے محاذ پر پاکستان کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہے، شاہ محمود قریشی
فائل فوٹو

ملتان:  شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ خارجہ پالیسی کے محاذ پر پاکستان کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہے ہمسایہ ممالک کچھ سوچے سمجھے پاکستان پر الزام لگا دیتے ہیں۔


تفصیلات کے مطابق ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا  کہ خارجہ پالیسی کے محاذ پر پاکستان کو بڑے  امتحان کا سامنا ہے،ہمسایہ ممالک چین ، افغانستان ، بھارت اور ایران  بنا تحقیق پاکستان پر الزام لگا دیتے ہیں ۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ افغانستان میں جنگ جاری ہے وہ کہتے ہیں  پاکستان سے دہشت گرد وہاں آ    کر دہشت گردی کرتے ہیں،ایران الزام لگاتا ہے کہ  جنداللہ تحریک کے لوگ ایران میں آ    کر فساد کرتے ہیں، چین بھی  ای ٹی آئی ایم تنظیم کی کارروائیوں کو پاکستان کے کھاتے میں ڈالتا ہے ، صورتحال یہ ہے کہ کوئی بھی بنا تحقیق پاکستان پر انگلی اٹھا دیتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مودی تو سوچی سمجھی پالیسی کے تحت  پاکستان کو تنہا کرنا چاہتا ہے، بھارت چاہتا ہے کہ وہ پاکستان کو سفارتی طور پر تنہا کر دے امریکا اب پاکستان کے بجائے بھارت کو اپنا اسڑیٹیجک اتحادی سمجھتاہے، بھارت نے بنگلادیش کا سہارا لے کر سارک کو یرغمال بنالیا پاکستان کو تنہا کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔

 شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کو گرے لسٹ میں ڈالا ہوا ہے سابق حکومت کے دور میں پاکستان گرے لسٹ میں آیا، ملک دوالیہ کے قریب پہنچ گیا، کئی ادارے دوالیہ ہو چکےہیں، ان حالت سے نکلنا ہے، اس مملکت کو رہتی دنیا تک قائم رہنا ہے تاہم بہت سے اتار چڑھاؤ آئے ہیں اور آتے جاتے رہیں گے۔