سری دیوی نے ’باہوبالی‘ کیوں ٹھکرائی

سری دیوی نے ’باہوبالی‘ کیوں ٹھکرائی

ممبئی:بھارت میں جتنی بھی فلمیں بنتی ہیں ضروری نہیں وہ سب کامیاب ہوں لیکن کچھ ایسی ہوتی ہیں جو ریکارڈ قائم کردیتی ہیں اور بڑا بزنس کرنے میں کامیاب ہو جاتی ہیں جن میں آج کل   سر فہرست باہو بالی ہے جو اب تک کی سب سے مہنگی ترین بھارتی فلم ہونے کے ساتھ ساتھ سب سے زیادہ بزنس کرنے والی فلم بھی بن چکی ہے ۔لیکنشاید آپ کو معلوم نہ ہو کہ بالی ووڈ  کی معروف اداکارہ سری دیوی کو بھی اس کامیاب فلم میں ایک نہایت اہم کردار کی آفر دی گئی تھی، تاہم اداکارہ نے اس سے انکار کردیا تھا ۔سری دیوی کو باہو بالی کی سوتیلی والدہ کا کردار آفر کیا گیا تھا جو کہ فلم میں باہو کے بعد سب سے اہم کردار ہے۔اس کردار نے ہر کسی کی توجہ اپنی جانب مبذول کروائی ہے ۔


میڈیا  رپورٹس کے مطابق فلم کے ہدایت کار ایس ایس راجاماؤلی کا اس کردار کے لیے پہلا انتخاب سری دیوی تھیں، تاہم انہوں نے فلم میں کام سے انکار کردیا۔

سری دیوی کی انکار کرنے کی وجہ فلم کی کہانی، ان کا کردار یا کاسٹ نہیں بلکہ اداکاری کے عوض ملنے والا معاوضہ تھا، اداکارہ نے اس کردار کے لیے ہدایت کار سے 5 کروڑ ہندوستانی روپے کا مطالبہ کیا تھا، تاہم اس کردار کے لیے اتنا بجٹ نہ ہونے پر انہوں نے فلم کی آفر ٹھکرا دی۔

سری دیوی کے بعد اس کردار کے لیے اداکارہ رامیا کرشنن کا انتخاب کیا گیا، جنہوں نے 2.5 کروڑ ہندوستانی روپے لے کر اس کردار کو اتنی خوبی سے نبھایا کہ وہ فلم کے ہیرو، ولن اور ہیروئن کے درمیان بھی بہترین نظر آئیں۔

خیال رہے کہ رامیا کرشنن نے اس سے قبل بالیو وڈ کی بھی کئی فلموں میں کام کیا، جن میں شاہ رخ خان کی فلم ’رام جانے‘ شامل ہے۔

واضح رہے کہ فلم ’باہوبلی‘  اس وقت ہندوستان کی سب سے زیادہ کمانے والی فلم ثابت ہوئی ہے، جس نے عامر خان کی کامیاب فلم ’پی کے‘ کا بھی ریکارڈ توڑ دیا ہے۔