میئر کراچی کی کار چِھننے کا معاملہ مشکوک بن گیا، مقدمہ 3 روز بعد درج

میئر کراچی کی کار چِھننے کا معاملہ مشکوک بن گیا، مقدمہ 3 روز بعد درج

image by facebook

کراچی: میئر کراچی وسیم اختر کی سرکاری گاڑی چِھن جانے کا معاملہ مشکوک بن گیا، واردات کا مقدمہ 3 روز بعد کراچی کے درخشاں تھانے میں درج کر دیا گیا، پولیس کا کہنا ہے کہ گاڑی پرائیویٹ ہے۔

تفصیلات کے مطابق میئر کراچی وسیم اختر نے تین روز تک اپنی سرکاری گاڑی کے چھینے جانے کا مقدمہ درج نہیں کرایا، تاہم ان کا کہنا تھا کہ وہ تھانے میں درخواست دے چکے ہیں۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ میئر کراچی نے تین روز بعد مقدمہ درج کرایا، اس سلسلے میں پولیس سمیت دیگر ادارے بھی تحقیقات کر رہے ہیں، جس مقام سے گاڑی چِھننے کا بتایا گیا وہاں کسی شخص کوعلم نہیں۔

 

پولیس ذرائع کے مطابق علاقہ مکینوں میں سے کوئی عینی شاہد موجود نہیں جس نے وارادت خود دیکھی ہو، پولیس سمیت دیگر اداروں نے مکمل روٹس کی فوٹیجز لینا شروع کر دی۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ گاڑی جس علاقے سے چھینی گئی ,  اس کے قریب صدرِ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کا کلینک ہے، کلینک پر سی سی ٹی وی کیمرے موجود ہیں مگرمنیجر پاکستان میں نہیں، منیجر کے آنے کے بعد سی سی ٹی وی فوٹیج کا جائزہ لیا جائے گا۔

پولیس ذرائع نے کہا کہ میئر کراچی کے مطابق گاڑی کا نمبر جی ایس ڈی 999 ہے، معلومات کے مطابق گاڑی 2016/17 ماڈل کی گرینڈی کرولا ہے تاہم پولیس نے ایکسائز سے معلومات کی تو گاڑی کا ماڈل اور سال مختلف نکلے۔

ایکسائز ریکارڈ کے مطابق چھینی جانے والی گاڑی ایلٹس ہے، پرائیویٹ گاڑی پر سرکاری نمبر پلیٹ لگا کر استعمال کیا جا رہا تھا، تفتیشی ادارے اس سلسلے میں ڈرائیور کو بھی بیان کے لیے طلب کر سکتے ہیں۔