ایف سی آر قانون کے خاتمے کا بل آج قومی اسمبلی میں پیش ہو گا

ایف سی آر قانون کے خاتمے کا بل آج قومی اسمبلی میں پیش ہو گا

اسلام آباد: سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے دائرہ کار کو فاٹا تک رسائی دینے کے لئے ایف سی آر قانون کے خاتمے کا بل آج قومی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی بھی قانون سازی کے دوران ایوان میں موجود ہوں گے۔


قومی امور میں فاٹا کو شامل کرنے کے لئے ایک بڑے قدم کے طور پر حکومت قانون سازی متعارف کرا رہی ہے تاکہ علاقے کو سپریم کورٹ اور ہائی کورٹس کے دائرے میں لایا جا سکے۔ اس مقصد کے لئے بل قومی اسمبلی میں منظوری کے لئے آج اس وقت پیش کیا جائے گا جب دوپہر کے بعد کاروائی دوبارہ شروع ہو گی۔

قابل اعتماد پارلیمانی ذرائع کے مطابق قانون سازی کے اہم کام کو ایجنڈے کا حصہ بنایا گیا ہے اور فاٹا سے متعلق مسائل کو بھی اس میں شامل کر لیا گیا ہے۔ وفاقی وزیر قانون و انصاف کی غیر موجودگی میں پارلیمانی امور کے وزیر شیخ آفتاب احمد ممکنہ طور پر بل ایوان میں پیش کریں گے۔

ایوان سے بل کی منظوری کی سورت میں اسے سینیٹ میں پیش کیا جائے گا جس کااجلاس بھی اسی شام کو ہو گا۔ توقع ہے کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی بھی قانون سازی کے دوران ایوان میں موجود ہوں گے۔

واضح رہے کہ سرتاج عزیز، جنرل (ر)عبدالقادرچار روز قبل فاٹا میں ایف سی آر ختم کرنے کا اعلان کرچکے ہیں اور اس امید کا اظہار کرچکے ہیں کہ پیر(آج) کو بل قومی اسمبلی میں منظور ہوجائے گا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں