اسرائیل ترکی پر حملے سے پہلے اپنے اعمال کا حساب دے،ترک صدارتی ترجمان

 اسرائیل ترکی پر حملے سے پہلے اپنے اعمال کا حساب دے،ترک صدارتی ترجمان

انقرہ: ترکی کے صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے کہا ہے کہ بین الاقوامی قانونی حقوق کو بالائے طاق رکھنے ، فلسطینی زمین پر قبضہ کرنے اور اقوام متحدہ کے فیصلوں کی منظّم شکل میں خلاف ورزی کرنے والے اسرائیل کو ترکی اور صدر رجب طیب اردگان کے بارے میں بات کرنے سے پہلے اپنے اعمال کا حساب دینا چاہیے۔


ترک خبر رساں ادارے کے مطابق صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے جاری کردہ اعلامیہ میں اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کے فلسطینی زمین پر قبضہ کرنے، ترکی اور ترک صدر کے خلاف بیانات پرشدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہزاروں معصوم فلسطینیوں کو قتل کرنے اور فلسطینی زمین کو کھلے قید خانے میں تبدیل کرنے والی ذہنیت کا اپنے احساس جرم سے بچنے کے لئے کیا گیا دعوی اتنی اہمیت نہیں رکھتا کہ اسے سنجیدگی سے لیا جائے۔

قالن نے کہا کہ القدس ہمارا قبلہ اوّل ہے ، جو یہ سمجھ رہے ہیں کہ ایک فیصلے سے اسے قابض حکومت کا دارالحکومت بنا لیں گے وہ ایک وہم کا شکار ہو گئے ہیں۔اسرائیلی حکام کو چاہیے کہ وہ ہمارے ملک اور ہمارے لیڈر پر حملے کرنے کی بجائے فلسطینی زمین پر قبضے کو ختم کریں، ترکی باقی دنیا کی طرح فلسطین میں بھی حق، قانون اور مظلوم کا ساتھ دینا جاری رکھے گا.

نیوویب ڈیسک< News Source