ایران نے اسلامی ملک میں مداخلت پرامریکا کو بڑی دھمکی دے دی

ایران نے اسلامی ملک میں مداخلت پرامریکا کو بڑی دھمکی دے دی

تہران :ایرا ن نے کہا ہے کہ اگر امریکہ نے شام کے خلاف جارحانہ اقدامات بند نہ کیے تو، اس ملک میں جنگ بندی کا عمل دشوار ہوجائے گا۔تہران میں ملکی اور غیر ملکی صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے جنوب مغربی شام میں جنگ بندی کے بارے میں کہا کہ وہ مذاکرات میں انجام پانے والے اتفاق رائے اور عملدرآمد کی ضمانت کے بارے میں فی الحال کچھ نہیں کہہ سکتے۔


بہرام قاسمی نے یہ بات زور دے کر کہی کہ شام میں امریکی اقدامات کی نوعیت کو دیکھتے ہوئے جنگ بندی میں ابہام پایا جاتا ہے اور اگر امریکہ نے شام کے خلاف جارحانہ اقدامات بند نہ کیے تو، اس ملک میں جنگ بندی جاری نہیں رہ سکتی۔

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ تہران شام کی ارضی سالمیت اور اقتدار اعلی کے تحفظ نیز جنگ بندی کے عمل کو تیز کیے جانے کا خواہاں ہے لیکن جنگ بندی کو کسی خاص علاقے تک محدود نہیں کیا جانا چاہیے۔

امریکہ کی جانب سے جامع ایٹمی معاہدے پر نظرثانی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں ایران کی وزرات خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ تہران واشنگٹن کے ہر اقدام کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہے۔ تاہم انہوں نے واضح کیا کہ امریکی صدر، اور امریکی حکومت اکیلے اس معاہدے پر نظرثانی نہیں کرسکتی۔