الیکشن کمیشن ممبران کی تقرری، شہباز شریف نے نظرثانی شدہ نام وزیراعظم کو بھجوا دیے

الیکشن کمیشن ممبران کی تقرری، شہباز شریف نے نظرثانی شدہ نام وزیراعظم کو بھجوا دیے
اتفاق رائے کے لیے مخلصانہ، سنجیدہ اور حقیقی مشاورت ہونی چاہیے، شہباز شریف۔۔۔۔۔۔فوٹو/ مسلم لیگ ن فیس بُک پیج

اسلام آباد: شہباز شریف نے الیکشن کمیشن سندھ اور بلوچستان کے ارکان کی تقرری کے لیے نظرثانی شدہ نام وزیراعظم کو بھجوادیے۔شہباز شریف کی جانب سے  وزیراعظم عمران خان کو خط لکھا گیا ہے جس میں الیکشن کمیشن ممبران کے نام تجویز کیے گئے ہیں۔


اپوزیشن لیڈر نے الیکشن کمیشن سندھ کے ممبر کے لیے سینئر وکیل خالد جاوید، جسٹس (ر) عبدالرسول میمن اور جسٹس (ر) نور الحق قریشی کے نام تجویز کیے ہیں جب کہ بلوچستان کے ممبر کے لیے بھی تین وکلا کے نام بھجوائے گئے ہیں جن میں صلاح الدین مینگل، شاہ محمد جتوئی اور رؤف عطاء شامل ہیں۔

شہبازشریف نے وزیراعظم کے نام خط میں کہا ہے کہ ممبران کے انتخاب کے لیے ہر امیدوار پر تفصیلی باہمی مشاورت ضروری ہے۔ اتفاق رائے کے لیے مخلصانہ، سنجیدہ اور حقیقی مشاورت ہونی چاہیے۔ حقیقی مشاورت نہ ہوئی تو آئینی ذمہ داری ادا نہیں ہو گی۔

خط میں مزید کہا گیا ہے کہ ہر شخص کی ساکھ کے لیے یہ مشاورت خفیہ رکھی جانی ضروری ہے۔ آپ نے سابقہ نامزد افراد پر جھوٹے اور بے بنیاد الزامات لگائے اور خلاف رائے دی۔ آپ نے اپنے وزیر خارجہ کے خط میں نامزد شخص کو ہی بعد میں ’نااہل‘ قرار دیا ایسے ہی تبصرے آپ کے نامزد کردہ افراد کے بارے میں بھی باآسانی کیے جا سکتے ہیں لہٰذا میں نے فیصلہ کیا ہے کہ ایسی رائے نہ دوں جس سے کسی کی دل آزاری ہو۔

اپوزیشن لیڈر کا خط میں وزیراعظم سے کہنا تھا کہ آپ کے نامزد کردہ افراد کے ناموں پر میں نے تفصیلی غور و خوض کیا۔ درخواست ہے کہ آپ ان ترمیم شدہ ناموں پر سنجیدگی سے غور کریں۔