چینی کمیشن کے معاملے پر وزیراعظم کو دھمکی دی گئی، شہزاد اکبر

چینی کمیشن کے معاملے پر وزیراعظم کو دھمکی دی گئی، شہزاد اکبر

اسلام آباد:معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ چینی کمیشن کے معاملے پر وزیراعظم پاکستان کو دھمکی دی گئی،کس نے دھمکیاں دیں،عدالت نے کہا تو سب سامنے لائیں گے،چینی کے معاملے پر 5 سال میں 29 ارب کی سبسڈی سامنے آئی اور فرانزک میں ثابت ہوا کہ گنے کے کاشت کار کو کم قیمت دی جاتی ہے۔شوگر کمیشن کی سفارشات کی روشنی میں اب ریکوری کا کام ہوگا۔


شوگر سکینڈل میں ملوث افراد کے خلاف فوجداری قوانین کے تحت مقدمات درج ہوں گے، اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے شوگر کمیشن کی سفارشات کی منظوری دے دی۔

شوگر سکینڈل میں ملوث افراد کے خلاف فوجداری قوانین کے تحت مقدمات درج ہوں گے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ چینی کے معاملے پر 5 سال میں 29 ارب کی سبسڈی سامنے آئی اور فرانزک میں ثابت ہوا کہ گنے کے کاشت کار کو کم قیمت دی جاتی ہے۔

شوگر کمیشن کی سفارشات کی روشنی میں اب ریکوری کا کام ہوگا، کچھ معاملات ایس ای سی پی اور ایف بی آر کو بھیجے ہیں،سبسڈی کی مد میں لاقانونیت کا جائزہ نیب لے گا۔معاون خصوصی نے کہا کہ کمیشن کی تعین کردہ قیمت اور چینی کی موجودہ قیمت میں بہت فرق ہے۔چینی کی قیمتوں کے تعین کے لیے حماد اظہر کی سربراہی میں کمیٹی کام کرےگی۔

چینی کمیشن کے معاملے پر وزیراعظم پاکستان کو دھمکی دی گئی،کس نے دھمکیاں دیں،عدالت نے کہا تو سب سامنے لائیں گے۔