اسٹیٹ بینک بجٹ میں رقم نکلوانے پر ود ہولڈنگ ٹیکس ختم کرنے کا مطالبہ

اسٹیٹ بینک بجٹ میں رقم نکلوانے پر ود ہولڈنگ ٹیکس ختم کرنے کا مطالبہ
ود ہولڈنگ ٹیکسز ختم کر دیے جائیں تاکہ رقم بینکوں میں جمع ہو سکے، اسٹیٹ بینک۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: اسٹیٹ بینک نے حکومت کو تجویز دی ہے کہ آئندہ بجٹ میں بینکوں سے نقد رقم نکلوانے پر عائد ود ہولڈنگ ٹیکس ختم کر دیا جائے۔رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ بینک نے آئندہ بجٹ میں بینکوں سے نقد نکلوانے پر ود ہولڈنگ ٹیکس ختم کرنے کے ساتھ بینکاری کے شعبے سے سپر ٹیکس کو ختم کرنے کی تجویز بھی دی ہے۔


مرکزی بینک کی جانب سے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو بھجوائی گئی تجاویز میں کہا گیا ہے کہ انفرادی اور کاروباری افراد نے بینکوں کا استعمال کم کر دیا ہے اور وہ بینکوں سے نقد رقم دور رکھنے کو ترجیح دے رہے لہذا ود ہولڈنگ ٹیکسز ختم کر دیے جائیں تاکہ رقم بینکوں میں جمع ہو سکے اور پاکستان کے مالیاتی شعبوں میں بہتری آ سکے۔

اسٹیٹ بینک نے یہ تجویز بھی دی ہے کہ کارپوریٹ ٹیکس شرح جو دیگر کمپنیوں کے ساتھ بینکوں پر لاگو ہے اسے 35 فیصد سے کم کر کے 29 فیصد کیا جائے اور 4 فیصد سپر ٹیکس واپس لیا جائے۔