وہ کورونا ویکسین جسے استعمال کرنے والوں کا خون جمنے لگا، تشویشناک خبر آ گئی

وہ کورونا ویکسین جسے استعمال کرنے والوں کا خون جمنے لگا، تشویشناک خبر آ گئی
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

یورپی ممالک میں آسٹرازینیکا کورونا ویکسین استعمال کرنے والوں میں خون جمنے کی شکایات سامنے آنے پر ڈنمارک نے ویکسین کا استعمال عارضی طور پر روک دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق ڈنمارک کے طبی حکام کے مطابق مختلف ملکوں میں آسٹرازینیکا ویکسین کے مخصوص بیچ کی دوا استعمال کرنے والوں میں خون جمنے کی شکایات سامنے آنے پرویکسین کا استعمال عارضی طور پر روکا جارہا ہے، اس نوعیت کا ایک کیس ڈنمارک میں بھی رپورٹ ہوا ہے جس کے بعد مذکورہ ویکسین کا استعمال روک دیا گیا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ اس کا استعمال 14 دن تک معطل رہ سکتا ہے۔

 واضح رہے کہ یہ ویکسین برطانیہ کی بڑی دوا ساز کمپنی آسٹرازینیکا نے تیار کی ہے جس نے دعویٰ کیا تھا کہ اس کی کورونا وائرس سے بچائو کیلئے تیار کردہ ویکسین آزمائشی مرحلے سے گزرنے اور ایک عبوری جائزے میں 90 فیصد تک موثر پائی گئی ہے۔کمپنی نے ایک غیر جانبدار بورڈ کی طرف سے برطانیہ اور برازیل میں ویکسین کی انسانوں پر آزمائش کے تجزیاتی نتائج جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسے یونیورسٹی آف آکسفورڈ کے ساتھ مل کر تیار کیا جا رہا ہے۔ 

آسٹرازینیکا کا کہنا تھا کہ کورونا ویکسین کی آزمائش کے دوران 23 ہزار افراد کا جائزہ لیا گیا اور اس دوران ایک گروپ میں ویکسین 90 فیصداور دوسرے گروپ میں 62 فیصد تک موثر پائی گئی، دونوں گروپوں کے مشترکہ نتائج سے ویکسین کا اوسطاً 70 فیصد موثر ہونا ظاہر ہوا ہے۔کمپنی نے کہا کہ ویکسین لگوانے والوں کو ہسپتال میں داخل ہونے کی ضرورت پیش آنے یا انفیکشن کے پیچیدہ صورت اختیار کرنے کی اطلاعات بھی نہیں ملیں۔