سپریم کورٹ نے نیو نیوز کی نشریات بحال کرنے کا حکم دیدیا

سپریم کورٹ نے نیو نیوز کی نشریات بحال کرنے کا حکم دیدیا

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے نیو نیوز کی بندش کا اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے نشریات بحال کرنے کا حکم دیدیا۔


سپریم کورٹ میں جسٹس مشیر عالم اور جسٹس یحییٰ آفریدی پر مشتمل دو رکنی بنچ نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف نیو نیوز کی اپیل پر سماعت کی۔

 نیو نیوز کے وکیل علی ظفر نے سپریم کورٹ میں دلائل دیتے ہوئے کہا کہ قانون میں دو اصول بالکل واضح ہیں، پہلا اصول یہ ہے کہ بنیادی قانون کے متصادم ماتحت قوانین نہیں بنائے جاسکتے، دوسرا اصول یہ ہے کہ ایک قانون مخالف قانون سازی نہیں ہوسکتی۔

نیو نیوز کے وکیل علی ظفر نے دلائل میں مزید کہا پیمرا نے ریگولیشن ایگزیکٹو اختیار کا استعمال کرتے ہوئے بنائے، اس طرح کی تبدیلیاں رولز کے ذریعے ممکن ہیں، رولز کی منظوری کابینہ سے ضروری ہیں، پیمرا قانون 2002 کے تحت عوامی مفاد کے خلاف مواد نشر ہونے پر پیمرا نشریات روک سکتا ہے۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہا آپ نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں ان قانونی نکات کو کیوں نہیں اٹھایا۔ نیو نیوز کے وکیل علی ظفر نے کہا ہم نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیمرا کے فیصلے کو چیلنج کیا۔ عدالت نے دلائل سننے کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے نیو نیوز کی نشریات بحال کرنے کا حکم دیدیا۔ عدالت نے قرار دیا نیو نیوز پیمرا ریگولیشنز کیخلاف ریلیف کیلئے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کرے۔