لڑکی کو برہنہ کرنے میں ملوث نکلا تو پھانسی دے دی جائے، علی امین گنڈا پور

لڑکی کو برہنہ کرنے میں ملوث نکلا تو پھانسی دے دی جائے، علی امین گنڈا پور

لاہور: میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے  صوبائی وزیر برائے مالیات علی امین گنڈا پور نے کہا ہے کہ ڈی آئی خان میں لڑکی کے ساتھ پیش آنے والے انسانیت سوز واقعے سے تعلق جوڑنے کی کوشش شرم ناک ہے۔ کسی بھی مجرم کی سرپرستی کی اور نہ پختونخوا میں ایسا ممکن ہے جبکہ بے جا الزام تراشی اور کیچڑ اچھالنے والوں میں ہمت ہے تو میرے خلاف شواہد پیش کیے جائیں۔ اگر اس معاملے پر کسی بھی طرح سے اثرانداز ہونا ثابت ہو جائے تو مجھے وزارت سے نکالنے کے بجائے پھانسی دے دی جائے۔

 

علی امین گنڈا پور نے مزید کہا کہ مجھ سمیت کسی بھی وزیر یا سیاسی رہنما کے لیے پولیس کے کام میں مداخلت ممکن نہیں کیونکہ پختونخوا میں پولیس مکمل آزاد اور سیاسی اثر و رسوخ سے پاک ہے۔ مجھ پر مجرموں کی سرپرستی کا الزام عائد کرنے والے پختونخوا میں پولیس کے نظام سے ناواقف ہیں۔

داوڑ کنڈی بھی عائشہ گلالئی جیسا کردار ادا کر رہے ہیں اور تحریک انصاف کی صفوں میں داوڑ کنڈی کی حیثیت عائشہ گلالئی سے زیادہ نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اس مذموم مہم کے پیچھے شریر ذہن اور گھٹیا مقاصد کار فرما ہیں۔ سیاسی عزائم کے حصول کی خاطر بے بنیاد الزام تراشی قابل مذمت ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ واقعے میں ملوث عناصر کو کٹہرے میں لایا جائے۔

یاد رہے گزشتہ دنوں تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی داوڑ خان کنڈی نے انکشاف کیا تھا کہ ڈیرہ اسماعیل خان میں لڑکی کو برہنہ کرنے کے واقعے میں ان کے ساتھی اور خیبرپختون خوا میں وزیر مالیات علی امین گنڈا پور ملوث ہیں۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں