چودھری شوگر ملز کیس میں نواز شریف احتساب عدالت پیش

چودھری شوگر ملز کیس میں نواز شریف احتساب عدالت پیش
شریف خاندان پر چودھری شوگر ملز کے ذریعے منی لانڈرنگ کا الزام ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ سوشل میڈیا

لاہور: سابق وزیراعظم نواز شریف کو چودھری شوگر ملز کیس میں احتساب عدالت میں پیش کر دیا  گیا ۔ پولیس کی جانب سے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے.نیب نے مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف سے جیل میں تفتیش کیلئے درخواست دے رکھی ہے۔ نیب نواز شریف کے 15 روہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرے گا۔ شریف خاندان پر چودھری شوگر ملز کے ذریعے منی لانڈرنگ کا الزام ہے۔


نیب کی درخواست پر احتساب عدالت کے جج امیر محمد نیب سماعت کرینگے۔ کوٹ لکھپت جیل انتظامیہ جمعۃ المبارک کو سابق وزیراعظم نواز شریف کو احتساب عدالت پیش کرے گی۔

ذرائع کے مطابق احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ سکیورٹی حکام صبح 7 بجے احتساب عدالت کے اردگرد سڑکیں بند کر دینگے۔

دوسری طرف لاہور کی احتساب عدالت نے چودھری شوگر ملز کیس میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی ہے۔ نیب پراسیکوٹر حافظ اسد اعوان نے درخواست دائر کی اور موقف اختیار کیا کہ نواز شریف کوٹ لکھپت جیل میں قید ہیں۔ نیب کو چودھری شوگر ملز کیس میں تفتیش کرنی ہے۔

نیب کی طرف سے درخواست میں مؤقف اپنایا گیا کہ جیل کا قیدی ہونے کی وجہ سے سابق وزیراعظم نواز شریف تفتیش کے لیے نیب آفس پیش نہیں ہو سکتے لہٰذا عدالت جیل میں ان سے تفتیش کی اجازت دے۔

نیب کے مطابق چودھری شوگر ملز کیس میں میاں نواز شریف سے تفتیش بہت ضروری ہے جس کے بغیر کیس آگے نہیں بڑھ سکتا۔ عدالت نے نیب کی درخواست پر میاں نواز شریف سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی۔

خیال رہے کہ چودھری شوگر ملز کیس میں نیب نے مریم نواز اور یوسف عباس کو بھی گرفتار کر رکھا ہے جو جسمانی ریمانڈ کے بعد اس وقت جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں۔