نیب مریم نواز کو گرفتاری سے 10 دن پہلے آگاہ کرے:لاہور ہائیکورٹ

 نیب مریم نواز کو گرفتاری سے 10 دن پہلے آگاہ کرے:لاہور ہائیکورٹ
کیپشن:    نیب مریم نواز کو گرفتاری سے 10 دن پہلے آگاہ کرے:لاہور ہائیکورٹ سورس:   file

لاہور :لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کے وارنٹ گرفتاری جاری نہ ہونے پر درخواست ضمانت نمٹا دی اور نیب کو حکم دیا کہ مریم نواز کو گرفتاری سے دس دن پہلے آگاہ کیا جائے۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سرفراز ڈوگر کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے مریم نواز کی درخواست ضمانت پر سماعت کی تو مریم نواز اپنی عبوری ضمانت کی معیاد ختم ہونے پر پیش ہوئیں۔سماعت کے دوران نیب کے وکیل نے بتایا کہ مریم نواز کے رائیونڈ اراضی کی منتقلی کے معاملے پر وارنٹ گرفتاری جاری نہیں ہوئے۔

مریم نواز کے وکیل نے استدعا کہ نیب کو پابند کیا جائے کہ وہ وارنٹ گرفتاری جاری کرنے سے دس دن  پہلے  مریم نواز کو آگاہ کرے۔

عدالت نے اسی بنیاد مریم نواز کی درخواست ضمانت نمٹا دی اور بنچ نے نیب کو حکم دیا کہ مریم نواز کی گرفتاری کی صورت میں انہیں دس دن پہلے آگاہ کیا جائے تاکہ وہ اس عرصے میں قانونی چارہ جوئی کرسکیں.

پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو میں سلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز  نے کہا کہ جب تک جہانگیر ترین کا نمک ،جہاز اور خرچے پر عیش کرتے رہے اس وقت شوگر مافیا نہیں تھے اب اچانک کیسےشوگر مافیا یاد آگیا۔ن لیگ سے ش اور م نکالنے والے خود عبرت کا نشان بن گئے ہیں۔پی ڈی ایم ٹوٹی نہیں بلکہ قائم ہے پیپلزپارٹی کا معاملہ مولانا فضل الرحمن افہام و تفہیم سے طے کریں گے۔

مریم نواز نے کہاکہ ڈسکہ کے عوام کو شاباش دینا چاہتی ہوں۔ ووٹ پر پہرہ دیا ووٹ چوروں کے حلق سے سیٹ جیتی۔ یہ ڈسکہ کی فتح نہیں بلکہ بہت بڑی تبدیلی کا پیش خیمہ ہے۔ اب تو ان کے اندر سے تقسیم کی آوازیں آرہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نیب پولیٹیکل انجیئنرنگ کا ادارہ بن چکا ہے۔مسلم لیگ (ن) حکومت کے تمام اوچھے ہتھکنڈوں کا بھرپور مقابلہ کرتی رہے گی۔حکومت کی جانب سے مسلم لیگ (ن) کیخلاف دن رات پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے۔نوازشریف کیخلاف تاریخ کا بدترین سیاسی انتقام کیا گیا۔حکومت نے مسلم لیگ (ن) کو ختم کرنے کی بھرپور کوشش کی مگر انہیں ناکامی ہوئی۔انہیں عوام کے میدان میں آنے کے بعد بھاگنا پڑا۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ عوام نے ڈسکہ الیکشن میں انہیں دھول چٹائی ہے۔عوام نے انہیں رنگے ہاتھوں ووٹ چوری کرتے ہوئے پکڑا ہےجس روز ان کی حکومت نہ رہی یہ باہر نکل کر مہم چلانے کے قابل نہیں رہیں گے۔نوازشریف نے لندن میں بیٹھ کر اس نااہل حکومت کو شکست دی۔

حکومت ختم ہو رہی ہے ان کی طاقت بھی اب ختم ہو رہی ہے۔حکومت نے ڈسکہ الیکشن میں اپنا پورا زور لگایا،ایک ارب کا پیکج بھی دیا۔مسلم لیگ (ن) نے ریاستی مشینری اور حکومت سے مقابلہ کیا ہے۔ڈسکہ کی فتح ایک بہت بڑی تبدیلی کا پیش خیمہ ہے۔