مذہبی سکالر ناصر مدنی کیخلاف سیشن عدالت میں اندراج مقدمہ کیلئے درخواست دائر

مذہبی سکالر ناصر مدنی کیخلاف سیشن عدالت میں اندراج مقدمہ کیلئے درخواست دائر
تصویر بشکریہ فیس بک

لاہور:اپنے مخصوص اور تنقیدی انداز سے سوشل میڈیا پر دنوں میں مشہور ہونے والے مذہبی سکالر ناصر مدنی کیخلاف سیشن عدالت میں فیس بک،یوٹیوب اور ٹک ٹاپ پر غلیظ زبان استعمال کرنے کے الزام میں اندراج مقدمے کی درخواست دائر کردی گئی ہے۔


میڈیا رپورٹس کے مطابق عدالت نے ڈائریکٹر ایف آئی اے سے 22 جنوری کو جواب طلب کرلیا۔ایڈیشنل سیشن جج سیف اللہ ہنجرا نے شہری عبدالرحمن کی اندراج مقدمہ کی درخواست پر سماعت کی۔

درخواستگزار کی جانب سے سلیم چودھری ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اپنایا کہ نام نہاد مذہبی سکالر ناصر مدنی سوشل میڈیا پر اسلام کی تعلیمات دے رہا ہے ،ناصر مدنی مختلف اجتماع ،مساجد میں خطاب کے دوران گھٹیا اور بیہودہ زبان استعمال کریں ہیں۔

درخواست گزار کے مطابق اسلام پاکیزہ مذہب ہے جس کا بیہودہ زبان میں پرچار دنیا بھر میں جگ ہنسائی کا سبب بن رہا ہے ،ناصر مدنی اپنے خطابات میں بہن بیٹیوں سے متعلق انتہائی غلیظ الفاظ کا استعمال کرتے ہیں،ناصر مدنی کے بیہودہ زبان میں کئے گئے خطباب سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کئے جاتے ہیں۔

لٰہذا معزز عدالت سے استدعا ہے کہ مولوی ناصر مدنی کے بیہودہ اور غلیظ زبان ولے خطبات کو سوشل میڈیا سے ہٹانے کا حکم دیا جائے اور مذہب کو بدنام کرنے پر مولوی ناصر مدنی کیخلاف فوجداری کارروائی کا حکم دیا جائے۔عدالت نے درخواست پر ڈائریکٹر ایف آئی اے سے 22 جنوری کو جواب طلب کرلیا۔