جبوتی، چین کے فوجی دستے پہلے غیرملکی فوجی اڈے کے لیے روانہ

جبوتی، چین کے فوجی دستے پہلے غیرملکی فوجی اڈے کے لیے روانہ

بیجنگ:بیرون ملک چین کا پہلا فوجی اڈہ قائم کرنے کے لیے فوجی دستے بحری راستے سے جبوتی کے لیے رواں دواں ہیں۔چین کے سرکاری میڈیا کے مطابق چین افریقی ملک جبوتی میں اس امریکی اڈے کے قریب اپنا پہلا فوجی اڈہ قائم کر رہا ہے جسے امریکہ مشرق وسطیٰ اور افریقہ میں اپنی بڑی اور اہم فوجی کارروائیوں کے لیے استعمال کرتا ہے۔


چین کا کہنا ہے کہ اس اڈے کے ذریعے افریقہ اور اس کے مغربی علاقوں میں امن کے قیام اور انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر کیے جانے والے اقدامات میں معاونت فراہم کی جائے گی۔چینی خبررساں ادارے کے مطابق اس فوجی اڈے کو فوجی تعاون، بحری مشقوں اور ریسکیو مشن کے لیے بھی استعمال کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ چین نے افریقہ میں اپنی سرمایہ کاری میں اضافہ کیا ہے اور حالیہ عرصے میں اپنی فوج میں بھی تیزی سے جدت لائی ہے۔ابھی یہ واضح نہیں کہ چینی اڈہ کب کام کا آغاز کرے گا اور نہ ہی یہ معلوم ہے کہ کتنے فوجی دستے گذشتہ روز جبوتی کے لیے روانہ ہوئے تھے۔

بدھ کو چائنا گلوبل ٹائمز میں چھپنے والے اداریے میں کہا گیا کہ 'چین کی فوجی ترقی 'چینی حفاظت' کو مضبوط بنانے کے لیے ہے نہ کہ دنیا کو کنٹرول کرنے کے لیے۔'اخبار کا کہنا ہے کہ امریکہ، جاپان اور فرانس کے بھی جبوتی میں فوجی اڈے ہیں۔