فاسٹ باؤلر سوٹسوبے پر 8 سال کی پابندی عائد کر دی گئی

فاسٹ باؤلر سوٹسوبے پر 8 سال کی پابندی عائد کر دی گئی

لاہور: کرکٹ میں فکسنگ کی داستان طویل سے طویل تر ہوتی جا رہی ہے ۔لارڈز ٹیسٹ میں پاکستان کے تین کھلاڑی  جن میں سلمان بٹ ، محمد آصف اور محمد عامر  کو فکسنگ اسکینڈل کے بعد پابندی کا سامنا کرنا پڑا اورآئی سی سی نے سخت ایکشن لیتے ہوئے ان کے خلاف کارروائی کی جس کے بعد باقی کھلاڑیوں کو اس سے عبرت حاصل کرنی چاہیے تھی لیکن ایسا نہیں ہوا اب ایک اور کھلاڑی پر فکسنگ کے الزام ثابت ہو چکے ہیں اور ان پر 8 سال کی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ایک روزہ کرکٹ کی بولنگ فہرست میں نمبر ون رہنے والے جنوبی افریقا کے فاسٹ بولر لونوابو سوٹسوبے پر 8 سال کی پابندی عائد کردی گئی، ان پر 2015 کے ڈومیسٹک ٹی ٹوئنٹی ایونٹ میں فکسنگ کرنے کا الزام تھا.


اینٹی کرپشن یونٹ کے چیرمین نے کہا کہ فاسٹ بولر نے مجموعی طور پر 10 الزامات قبول کیے جن میں میچ فکس کرنا، بدعنوانی کے کام میں ملوث ہونے سے متعلق تفصیلات فراہم نہ کرنا، دوسرے شخص کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی سے متعلق آگاہ نہ کرنا، تحقیقاتی ٹیم کے ساتھ تعاون نہ کرنا اور حقائق کو چھپا کر تحقیقات میں رکاؤٹ بننا شامل ہیں۔

 سوٹسوبے سے قبل اسی کرپشن کیس میں 6 کھلاڑی سزا پاچکے ہیں۔جنوبی افریقا کے اینٹی کرپشن کوڈ کے تحت سزا پانے والے کھلاڑیوں میں غلام بودی، الوریو پیٹریسن، تھامی سولیکیلو، جین سائمز، پمیلیلا ماشیکوے اور ایتھی امبہالیتی شامل ہیں جو 2 سے 20 سال تک کی سزا پاچکے ہیں۔

واضح رہے جنوبی افریقا کے کرکٹ بورڈ نے 2015 میں سابق فاسٹ بولر لونوابو سوٹسوبے کو فکسنگ کے جرم میں معطل کردیا تھا۔