نواز شریف کو وکیل مقرر کرنے کیلئے 19 جون تک کی مہلت

نواز شریف کو وکیل مقرر کرنے کیلئے 19 جون تک کی مہلت
ہم تو روز لاہور سے آتے ہیں اور سحری کر کے عدالت کیلئے روانہ ہوتے ہیں، نواز شریف۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو اپنے خلاف نیب ریفرنسز کی پیروی کی غرض سے وکیل مقرر کرنے کے لیے 19 جون تک کی مہلت دے دی۔


احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نواز شریف کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت کی۔ سابق وزیراعظم نوازشریف آج اپنے وکیل کے بغیر احتساب عدالت میں پیش ہوئے جبکہ ان کی صاحبزادی مریم نواز بھی عدالت میں موجود تھیں۔

سماعت کے آغاز پر جج محمد بشیر نے نواز شریف سے استفسار کیا کہ آپ کو دوسرا وکیل رکھنا ہے یا خواجہ حارث کو ہی کہا ہے؟۔ ساتھ ہی جج نے کہا کہ ابھی تک خواجہ حارث کی کیس سے دستبرداری کی درخواست منظور نہیں کی گئی۔

مزید پڑھیں: عمران خان اور اہلیہ کی روضہ رسول ﷺ پر حاضری

جس پر نواز شریف نے عدالت کو آگاہ کیا کہ یہ اتنا آسان فیصلہ نہیں کہ ایک وکیل نے کیس پر 9 ماہ محنت کی ہے۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ خواجہ حارث نے سپریم کورٹ میں کہہ دیا تھا کہ وہ ہفتہ، اتوار کو کام نہیں کریں گے ہم تو روز لاہور سے آتے ہیں اور سحری کر کے عدالت کے لیے روانہ ہوتے ہیں۔

ساتھ ہی انہوں نے سوال کیا کہ اب کیا 24/7 کیس چلانا ہے؟۔ کیا ایسی کوئی اور مثال ہے؟۔ نواز شریف کا مزید کہنا تھا کہ اس کیس میں 100 کے قریب پیشیاں ہو چکی ہیں۔

مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے عدالت سے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ اس مرحلے پر نیا وکیل مقرر کرنا ممکن نہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہفتے اور اتوار کو یا عدالتی وقت ختم ہونے کے بعد سماعت نہیں ہونی چاہیے ہم پیر سے جمعہ تک اس عدالت میں پیش ہو رہے ہیں اس وجہ سے سپریم کورٹ سے میرا ایک کیس عدم پیروی پر خارج ہو گیا جبکہ شرجیل میمن کیس میں ایک ملزم کا وکیل ہوں اور عدالت میں پیش نہ ہونے پر مجھ پر جرمانہ ہوا۔

سماعت کے بعد احتساب عدالت نے نواز شریف کو وکیل مقرر کرنے کے لیے 19 جون تک کی مہلت دے دی۔ نواز شریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت بھی 19 جون کو ہی ہو گی۔

 

یہ بھی پڑھیں: اس بار وفاق میں مخلوط حکومت بنے گی، شرجیل میمن

دوسری جانب ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت 14 جون تک کے لیے ملتوی کر دی گئی۔ بعد ازاں احتساب عدالت کے جج نے ریمارکس دیئے کہ نواز شریف اور مریم نواز پرسوں کی سماعت پر بے شک پیش نہ ہوں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز احتساب عدالت میں العزیزیہ ریفرنس کی سماعت کے دوران خواجہ حارث نے نواز شریف کے خلاف نیب ریفرنسز سے علیحدہ ہونے کا اعلان کرتے ہوئے عدالت سے اپنا وکالت نامہ واپس لینے کی درخواست کی تھی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں