’’آئین میں خفیہ ووٹ کا ذکر ہے کیمروں کا نہیں، ووٹ چورو ،شرم کرو ، کرسی چھوڑو ‘‘

’’آئین میں خفیہ ووٹ کا ذکر ہے کیمروں کا نہیں، ووٹ چورو ،شرم کرو ، کرسی چھوڑو ‘‘
کیپشن:   ’’آئین میں خفیہ ووٹ کا ذکر ہے کیمروں کا نہیں، ووٹ چورو ،شرم کرو ، کرسی چھوڑو ‘‘ سورس:   file

اسلام آباد : مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے سینیٹ الیکشن کیلئے پولنگ بوتھ میں کیمرے نصب ہونے کی شدید مذمت کی ہے۔ 

اپنے ٹویٹ میں مریم نواز نے کہا کہ عادی، سند یافتہ ووٹ چور ہر بار ووٹ چوری کا نیا طریقہ ڈھونڈ کر لاتا ہے مگر رنگے ہاتھوں پکڑا جاتا ہے۔ مگر اب حالت اتنی پتلی ہو چکی ہے کہ ایجنسیوں سے فون کروا کر،گن پوائنٹ پر ووٹ لینے سے بھی بات نہیں بنی اور کیمرے لگا کر اپنے ہی ارکان کی جاسوسی کرنی پڑ گئی۔ ایسی تاریخی ذلت! توبہ !

مریم نواز نے کہا کہ آر ٹی ایس اور ڈسکہ دھند کے بعد سینیٹ پر ڈاکہ ڈالنے والے آخری جنگ ہار چکے۔ سپریم کورٹ سے منہ کی کھائی، آئینی ترمیم میں ناکام رہے،صدارتی آرڈینینس ردی کا ٹکڑا بن گیا تو خفیہ کیمروں والے مستری لے آئے۔ آئین میں خفیہ ووٹ کا ذکر ہے خفیہ کیمروں کا نہیں! ووٹ چورو شرم کرو اور کرسی چھوڑو!

انہوں نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ اور اپوزیشن کے ووٹ چوروں کو این آر او  دینے سے انکار کے بعد، ای سی پی اور سپریم کورٹ کے کندھے پر رکھ کر بندوق چلانے میں ناکامی کے بعد خفیہ کیمروں کے ذریعے آئین کی توہین ایک سنگین جرم ہے۔ سیلیکٹرز بھی سوچتے ہوں گے کیا مصیبت گلے پڑ گئی! نا اُگلے بن رہی ہے نا نگلے بن رہی ہے۔