فلسطینی نژاد امریکی سپر ماڈلز بہنیں اسرائیلی حملوں پر برس پڑیں

فلسطینی نژاد امریکی سپر ماڈلز بہنیں اسرائیلی حملوں پر برس پڑیں
سورس:   file photo

واشنگٹن ،فلسطین میں اسرائیل کے  حملوں اور مظالم پر دنیا کے بااثر افراد کی خاموشی پر فلسطینی نژاد امریکی سپر ماڈلز بہنوں جی جی اور بیلا حدید نےشدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ ایسے لوگوں کو معاف نہیں کرے گی۔

فلسطینی نژاد ماڈلز جی جی اور بیلا حدید نے فلسطین میں اسرائیل کے حالیہ حملوں کی اگرچہ پہلے روز ہی مذمت کی تھی اور اپنے آبائی ہم وطنوں سے اظہار یکجہتی کیا تھا تاہم اب دونوں بہنوں نے انسٹاگرام پر واضح پوسٹ میں دنیا کی خاموشی پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

سپر ماڈل جی جی حدید نے لکھا کہ کوئی بھی شخص نسلی عدم مساوات، مخنث افراد اور خواتین کے حقوق کی مخالفت نہیں کر سکتا، اسی طرح ہر کوئی کرپشن، حکومت بدسلوکیوں اور ناانصافیوں کی مذمت کرتا ہے مگر ایسے ہی افراد فلسطینوں پر اسرائیلی مظالم پر خاموش رہنے کو ترجیح دیتے ہیں۔سپر ماڈل کے مطابق کوئی بھی شخص کسی خاص طرح کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے مسئلے کا انتخاب نہیں کر سکتا۔

سپر ماڈل بیلا حدید نے بھی اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں اپنے آبائی وطن پر اسرائیلی حملوں کی شدید مذمت کی۔

بیلا حدید نے لکھا کہ مستقبل میں آنے والی نسلیں جب پیچھے مڑ کر تاریخ کا جائزہ لیں گی تو وہ سوچیں گی کہ ہم نے کس طرح اور کیوں مسلسل فلسطینیوں پر مظالم جاری رہنے دیئے ۔ 

بیلا حدید نے مزید لکھا کہ سیاستدانوں پر غیرجانبدارانہ لفظ استعمال کرنے پر تو تنقید کی جاتی ہے مگر دنیا غلط لوگوں کے خلاف بولنے کے معاملے پر خاموشی اختیار کیے ہوئے ہے۔

انہوں نے دنیا کو پیغام دیا کہ تاریخ ہمیں بولنے کا سبق دیتی ہے اور یہ سادہ فارمولا بھی یاد رکھیں کہ کوئی بھی شخص یا تو صحیح راستے پر ہوتا ہے یا پھر وہ ہوتا ہی نہیں۔

خیال رہے کہ بیلا اور جی جی حدید کے والد محمد حدید فلسطین میں پیدا ہوئے تھے تاہم وہ کئی دہائیاں قبل امریکا منتقل ہوگئے تھے۔

بیلا اور جی جی حدید کی پیدائش امریکا میں ہی ہوئی تھی تاہم وہ اس کے باوجود فخریہ انداز میں خود کو فلسطینی نژاد کہتی ہیں اور فلسطینیوں پر مظالم کے خلاف ہمیشہ آواز اٹھاتی رہتی ہیں۔

ماضی میں بھی دونوں بہنوں اور ان کے خاندان کے دیگر افراد اسرائیلی مظالم کے خلاف آواز اٹھاتے رہے ہیں۔