اسرائیلی وزیر دفاع کا جوابی حملے مکمل رکنے تک غزہ پر حملے جاری رکھنے کا اعلان

اسرائیلی وزیر دفاع کا جوابی حملے مکمل رکنے تک غزہ پر حملے جاری رکھنے کا اعلان
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیلی وزیر دفاع نے جوابی حملوں کے مکمل رکنے تک غزہ میں حملے جاری رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ حملوں کیلئے تمام ذرائع اور آپشنز ٹیبل پر موجود ہیں۔ 

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی وزیردفاع بینی گانٹس کے مطابق اسرائیلی فوج نے غزہ میں سینکڑوں اہداف کو نشانہ بنایا، حملوں میں سینئر عسکریت پسند مارے گئے، حملوں کیلءےتمام ذرائع اور آپشنز ٹیبل پر موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیلی فوج حملے جاری رکھے گی اور مکمل اور طویل المدتی خاموشی لائے گی، اس مقصد کے حاصل ہونے کے بعد ہی کشیدگی کم کرنے پر بات کرسکتے ہیں، فی الحال صورتحال معمول پر آنے کا کوئی وقت نہیں بتایا جاسکتا۔

واضح رہے کہ غزہ پر اسرائیل کی وحشیانہ بمباری کا سلسلہ تاحال جاری ہے جس کے نتیجے میں شہید فلسطینیوں کی تعداد 43 ہو گئی جبکہ سینکڑوں افراد زخمی ہیں۔ اسرائیلی فورسز کی جانب سے فلسطین میں رہائشی عمارتوں کو نشانہ بنایا گیا جس کے باعث درجنوں عمارتیں مٹی کا ڈھیر بن گئیں۔

فلسطینی وزارت صحت نے بتایا کہ اسرائیلی حملوں میں شہید فلسطینیوں کی تعداد 35 ہو گئی ہے جبکہ سینکڑوں افراد زخمی ہیں جنہیں طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے۔ حماس رہنما باسم النعیم کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فضائیہ کے حملوں میں اب تک 43 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں، سب سے زیادہ 23 شہادتیں بیت حنون میں ہوئیں۔

سابق حماس وزیر باسم النعیم کا کہنا تھا کہ صیہونی حملوں میں زخمیوں کی تعداد 300 ہے، رات سے جاری اسرائیلی حملے شدید تر ہو گئے ہیں۔ پاکستانی عوام کو عید کی مبارکباد دیتے ہوئے حماس رہنما کا کہنا تھا کہ ہمارے لئے دعا کی جائے، اسرائیل بربریت کا مرتکب ہے، دہشت گرد ملک کو تسلیم نہ کیا جائے۔

دوسری جانب حماس رہنماؤں کی جانب سے اسرائیل پر 100 سے زائد راکٹ حملوں کا دعوی کیا گیا ہے اور حماس نے راکٹ حملوں کو غزہ کی 13 منزلہ رہائشی عمارت پر اسرائیلی حملے کا جواب قرار دیا ہے۔ فلسطینی تنظیم حماس کی بمباری سے اشکیلون میں اسرائیل کی تیل کی پائپ لائن تباہ ہو گئی جبکہ اسرائیل میں شہریوں کو بنکر کے قریب رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔