نواز شریف، مریم اور صفدر کی پے رول پر رہائی تین روز بڑھانے کا فیصلہ

نواز شریف، مریم اور صفدر کی پے رول پر رہائی تین روز بڑھانے کا فیصلہ

محکمہ داخلہ پنجاب نے جاتی امرا کو سب جیل قرار دیئے جانے کی اطلاعات کی بھی تردید کر دی۔۔۔۔۔۔فوٹو/ اسکرین گریب

 

لاہور: پنجاب حکومت نے نوازشریف، مریم اور کیپٹن (ر) صفدر کی پے رول پر رہائی میں مزید تین روز اضافے کا فیصلہ کر لیا۔

 

بیگم کلثوم نواز کی وفات کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو حکومت نے 12 گھنٹے کے لیے پے رول پر رہا کیا جس کے بعد انہیں اڈیالہ جیل سے سخت سیکیورٹی میں جاتی امرا منتقل کیا گیا۔

 

 تینوں افراد اڈیالہ جیل سے رہائی کے بعد نور خان ایئر بیس سے خصوصی پرواز کے ذریعے رات ڈھائی بجے لاہور پہنچے تھے۔

 

شریف خاندان نے تینوں شخصیات کی پے رول پر 5 روز کے لیے رہائی کی درخواست دے رکھی تھی۔

 

محکمہ داخلہ پنجاب کے مطابق نواز شریف، مریم اور محمد صفدر کی پے رول پر رہائی میں مزید تین دن اضافے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کی سمری وزیراعلیٰ پنجاب کو ارسال کر دی گئی ہے۔

 

ترجمان محکمہ داخلہ نے بتایا کہ کلثوم نواز کی میت پاکستان آنے میں کسی تاخیر پر پے رول میں مزید اضافہ کر دیا جائے گا جب کہ پے رول کی بڑھائی جانے والی مدت آج رات 12 بجے سے شروع ہو گی۔

 

محکمہ داخلہ پنجاب نے جاتی امرا کو سب جیل قرار دیئے جانے کی اطلاعات کی بھی تردید کر دی۔

 

واضح رہے کہ کلثوم نواز کے خاوند اور سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) محمد صفدر ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت سے سزا یافتہ ہیں اور 13 جولائی سے اڈیالہ جیل میں قید ہیں جنہیں کلثوم نواز کے انتقال کے باعث خصوصی طور پر رہا کیا گیا ہے۔

 

شریف خاندان کی جانب سے رسمِ قل تک 5 دن کے لیے تینوں کی پیرول پر رہائی کی درخواست کی گئی ہے۔

 

گزشتہ روز بیگم کلثوم نواز کے انتقال کے بعد شہباز شریف سمیت خاندان کے دیگر افراد اڈیالہ جیل پہنچے تھے اور 4 گھنٹے تک نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر سے ملاقات کی تھی۔